سعودی شوریٰ کا وزارت حج و عمرہ کو منیٰ میں خیموں کی گنجائش بڑھانے کا حکم

سعودی شوریٰ کا وزارت حج و عمرہ کو منیٰ میں خیموں کی گنجائش بڑھانے کا حکم

  

ریاض (اے پی پی) سعودی ارکان شوریٰ نے سالانہ رپورٹ پر بحث کے دوران وزارت حج و عمرہ پر کڑی نکتہ چینی اور برہمی کا اظہار کیا کہ وزارت خزانہ سے 25 ملین ریال لینے کے باوجود 25 سالہ حکمت عملی تیار نہیں کی گئی۔ 2 برس سے اس حوالے سے کوئی چیز سامنے نہیں آئی۔ وزارت حج و عمرہ پر ویب سائٹ کو جدید خطوط پر استوار نہ کرنے اور اہم زبانوں میں اطلاعات نہ دینے پر بھی ناگواری کا اظہا رکیا گیا۔ ارکان شوریٰ کا کہنا تھا کہ وزارت کے اہلکار سوشل میڈیا سے غائب نظرآرہے ہیں۔

ایک اہم نکتہ چینی یہ کی گئی کہ جدہ کے کنگ عبدالعزیز انٹرنیشنل ایئرپورٹ کے استقبالیہ ہالوں میں عازمین حج کو مکہ روانہ کرنے سے قبل گھنٹوں کیوں روکا جاتا ہے۔ ارکان شوریٰ نے اس امر کی جانب بھی توجہ مبذول کرائی کہ تاریخی اسلامی مقامات پر کوئی توجہ نہیں کی جارہی ہے۔ وہاں امن وسلامتی اور صفائی کے انتظامات ناپید ہیں۔ ان میں جبل نور ، غار حراء اور غار ثور قابل ذکر ہیں۔ ارکان شوریٰ نے وزارت حج و عمرہ سے مطالبہ کیا کہ وہ متعلقہ اداروں کے ساتھ تعاون کرکے حج اور عمرہ پر آنے والوں کے لئے سہولتیں اور آرام کرنے کے مقامات بڑے پیمانے پر قائم کرائے۔ علاوہ ازیں منیٰ میں حاجیوں کے خیموں کی گنجائش بڑھانے پر بھی توجہ مرکوز کی جائے۔

مزید :

عالمی منظر -