حج کوٹہ کی تقسیم کا فارمولہ کیا ہونا چاہئے؟ حکومت مشکل میں پھنس گئی

حج کوٹہ کی تقسیم کا فارمولہ کیا ہونا چاہئے؟ حکومت مشکل میں پھنس گئی

  

لاہور(ڈویلپمنٹ سیل)حج2018ء ،حکومت مشکل کا شکار ،کس کو کوٹہ دیں کس کو نہ دیں،حج2018ء کی تقسیم میں تاخیر کا خدشہ ،پرائیویٹ حج سکیم کیلئے رکھے گئے 40فیصد حج کوٹہ سے نئے ٹورز آپریٹر کے لیے مزید7سے 10فیصد کوٹہ کے کٹوتی کی تجویز ،3سے4سو نئے ٹورز آپریٹر کو اکاموڈیٹ کرنے کا منصوبہ تیار،نئی انرول کمپنیوں نے کم ازکم کوٹہ پچاس رکھنے اور زیادہ سے زیادہ کوٹہ ڈیڑھ سو رکھنے کی تجویزدے دی،ایک حلقے نے تمام ٹورز آپریٹرکا کوٹہ برابر کرنے کا مطالبہ کیا ہے ہوپ نے وزارت مذہبی امور میں گردش کرنے والی تمام افواہوں پر شدید ردِ عمل کا اظہار کرتے ہوئے مزید کٹوتی مسترد کر دی اور کہا ہے کہ حج2018ء کے لیے سرکاری اور پرائیویٹ سکیم کے حج کوٹہ کی تقسیم پچاس پچاس فیصد کے حساب سے رکھی جائے ،10سال سے کام کرنے والوں کونئے ٹورزآپریٹر کے ساتھ جوڑنا ظلم ہے، ہوپ کے رہنماؤں نے روزنامہ پاکستان کو بتایا کہ ہمیں نئی کمپنیوں کو کوٹہ دینے پر بھی کوئی اعتراض نہیں ہے ،سپریم کورٹ کے فیصلے کے مطابق بنائے گئے کرائی ٹیریا پر عمل درآمد کیا جائے ،اضافی کوٹہ جو 5ہزار کا ملا ہے اس میں سے آدھا نئے ٹورز آپریٹر کو دیا جائے اور آدھا 50کوٹہ والوں کو دیا جائے ،حکومت 50کوٹہ والوں کی مشکلات کو سمجھے کم ازکم ان کا کوٹہ دو بسوں کا کیا جائے ہوپ نے کسی قسم کی حج کوٹہ کی کٹوتی کو مسترد کرتے ہوئے تمام امور میرٹ پر نمٹانے کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -