کیپٹن (ر) صفدر کو 9 ارب کی ادائیگی،پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے وضاحت مانگ لی

کیپٹن (ر) صفدر کو 9 ارب کی ادائیگی،پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے وضاحت مانگ لی

اسلام آباد (آن لائن) پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے سابق وزیراعظم نواز شریف کے داماد کیپٹن (ر) صفدر کو 9 ارب دینے پر وزارت خزانہ سے وضاحت طلب کرلی ہے، پی اے سی سیکرٹریٹ نے سیکرٹری خزانہ اور سیکرٹری کابینہ کو حکم نامہ جاری کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ آڈٹ حکام کے مطابق سابق وزیراعظم نواز شریف نے اپنے داماد کیپٹن (ر) صفدر کو 9 ارب روپے جاری کرنے کے احکامات دیئے تھے یہ بھاری رقوم جاری کرنے سے قبل نہ پارلیمنٹ کو اعتماد میں لیا گیا نہ ہی بجٹ دستاویزات میں ذکر ہے۔ سیکرٹری کابینہ ڈویژن سہیل عمار نے پی اے سی کے اجلاس میں اقرار کیا تھا کہ کیپٹن (ر) صفدر کو 9 ارب روپے جاری ہوئے تھے۔کمیٹی نے سیکرٹری کابینہ سہیل عمار کو حکم دیا کہ جن ترقیاتی سکیموں کیلئے یہ فنڈز جاری ہوئے تھے اس کی تفصیلات دیں۔ پی اے سی چیئرمین اور ارکان کے متفقہ فیصلے اور حکم کے باوجود سیکرٹری کابینہ نے پی اے سی کو تاحال تفصیلات فراہم نہیں کیں جس کے نتیجہ میں پی اے سی سیکرٹریٹ نے یادد ہانی کے طور پر دوبارہ خط تحریر کیا اور 9 ارب روپے کا حساب مانگ لیا ہے، کابینہ ڈویژن ذرائع نے بتایا کہ 9 ارب میں سے زیادہ فنڈز کیپٹن (ر) صفدر کے حلقے میں خرچ ہوئے ہیں او ران سکیموں پر خرچ ہوئے ہیں جن کے ٹینڈرز بھی طلب نہیں کئے گئے تھے ۔ پی اے سی میں شامل اپوزیشن کے ارکان چیئرمین سید خورشید شاہ پر زور دے رہے ہیں کہ وہ 9 ارب کے اخراجات کی تفصیلات ، حساب حکومت سے منگوا ئیں اور 9 ارب روپے جاری کرنے والے سیکرٹری کے خلاف کرپشن ریفرنس نیب کو ارسال کریں۔ دریں اثنا شیخ رشید نے کہا ہے کہ پی اے سی سے 9 ارب روپے کے اخراجات کا ریکارد حاصل کرنے کیلئے متعدد بار درخواستیں دی ہیں لیکن سیکرٹری کابینہ نے بھی تک یہ ریکارڈ فراہم ہی نہیں کیا انہوں نے کہا 9 ارب سے کرپشن کی نذر ہوئے حساب لے کر دم لیں گے۔ معاملہ ہر مرحلہ پر اٹھاؤں گا لوٹی ہوئی قومی دولت واپس لانے میں پوری کوشش کروں گا۔

مزید : صفحہ آخر