غیر ملکی سرکاری دوروں کیلئے نئی گائیڈلائنزجاری کردیں گئیں

غیر ملکی سرکاری دوروں کیلئے نئی گائیڈلائنزجاری کردیں گئیں

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)وفاقی حکومت نے غیر ملکی سرکاری دوروں کیلئے نئی گائیڈلائنزجاری کردیں جس کے تحت صدر،وزیراعظم ، چیئرمین سینیٹ ، سپیکرقومی اسمبلی، چیف جسٹس اور وزیرخارجہ کوفرسٹ کلاس جبکہ وفاقی وزرا،وزرائے مملکت، ایم این ایز ، سینیٹراور سفرا کو بز نس کلاس کی سہولت ہوگی۔وفاقی حکومت اور مختلف وزارتوں کے دیگر افسران کو اکانومی کلاس کی سہولت ہوگی۔وفاقی حکومت کی جانب سے جاری کردہ گائیڈ لائن کے مطابق جن ممالک سے سفارتی تعلقات نہیں ہیں ان سے بھی کوئی رابطہ نہیں کیا جائے گا،کشیدہ سفارتی تعلقات والے ممالک سے رابطے کیلئے پیشگی منظوری لازمی قرار دیا گیا ہے جبکہ آرمینیا،کوریا حکام کیساتھ اجلاسوں کیلئے خصوصی اجازت طلب کرنا ہو گی ۔نئی ہدایات کے مطابق مشیروں، معاونین خصوصی ،افسران، تمام وفاقی وزرا،وزرامملکت پرایک سال میں 3 سے ز یادہ غیرملکی دوروں پرپابندی عائد کر دی گئی ہے جبکہ ریٹائرمنٹ میں 3ماہ یااس سے کم عرصہ رہ جانے پرافسران پرغیرملکی دوروں پر بھی پابندی عائد کردی ہے ۔ اس کے علاوہ کابینہ ارکان پرقومی اسمبلی ، سینیٹ اجلاس کے دوران ملکی اور غیر ملکی دوروں پر بھی پابندی عائدکردی گئی ہے ۔غیرملکی دوروں کیلئے تمام کابینہ ارکان پرپی آئی اے کے سوا سفرکرنے پر بھی پابندی عائد کردی گئی ہے اوریو این ایجنسیزکے سو ا کسی غیرملکی یاعالمی ایجنسی کی سفری پیشکش قبول نہیں کی جائیگی، جس کا مقصدغیرملکی کمپنیوں کی میزبانی کی حوصلہ شکنی کرنا ہے ۔

مزید :

صفحہ اول -