آصف زرداری من مانی قیمتوں پر گنا خریدنا چاہتے ہیں:عارف علوی

آصف زرداری من مانی قیمتوں پر گنا خریدنا چاہتے ہیں:عارف علوی

کراچی (اسٹاف رپورٹر) پاکستان تحریک انصاف سندھ کے صدر و رکن قومی اسمبلی ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ سندھ کے کاشتکاروں اور آبادگار وں کو سپریم کورٹ کے احکامات کے باوجود بھی گنا سستا بیچنے پر مجبور کیاجارہا ہے۔ سندھ کے شوگر مل مالکان جن میں سے زیادہ تر شوگر ملز آصف علی زرداری کی ہیں، غریب کاشتکاروں اور آبادگاروں کو سپریم کورٹ کی جانب سے مقرر کردہ گنے کی قیمت کے بجائے اپنی من مانی قیمتوں پر گنا خریدنا چاہتے ہیں جس سے آبادگاروں کو نقصان کا سامنا ہوگا۔ پیپلز پارٹی کی سندھ حکومت کی کسان دشمن پالیسیوں کے نتیجے میں سندھ کے کاشتکار اور کسان شدید مشکلات کا شکار ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ پیپلز پارٹی اپنے سیاسی مخالفین کو دبانے کے لیے سندھ پولیس کے ذریعے ان پر جھوٹے مقدمات اور انتقامی کارروائیاں کروا رہی ہے جس کی ہم شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں۔ پیپلز پارٹی اندرونِ سندھ تحریک انصاف کے کارکنان کے خلاف انتقامی کارروائیاں فوری طور پر بند کرے۔ ڈاکٹر عارف علوی نے گزشتہ دنوں تحریک انصاف ، عمر کوٹ کے کارکن شفیع محمد سولنگی کی پولیس تشدد سے ہلاکت پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے کارکن شفیع محمد سولنگی پر انسدادِ دہشت گردی کی عدالت میں جھوٹا مقدمہ درج کیا گیا اور پولیس نے انہیں زدوکوب کیا۔ اندرونِ سندھ ہمارے کارکنوں کو جبر و تشدد کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔ پیپلز پارٹی سندھ پولیس کے ذریعے سندھ میں تحریک انصاف کو کمزور کرنے کی ناکام کوششیں کر رہی ہے۔ یہ باتیں انہوں نے کراچی پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہیں۔ اس موقعے پر ان کے ہمراہ تحریک انصاف کے رہنما حلیم عادل شیخ ، الیاس شیخ، داوا خان صابر، اظہر لغاری، طاہر ملک اور زید ٹالپر بھی موجود تھے۔ ڈاکٹر عارف علوی نے مزید کہا کہ اس وقت سندھ حکومت کرپشن مافیا بن چکی ہے۔ پیپلز پارٹی سندھ میں اپنی آخری سانسیں لے رہی ہے۔ زرداری ٹولے سے سند ھ کے غریب عوام سے لوٹی ہوئی ایک ایک پائی کا حساب لیں گے۔ پیپلز پارٹی چاہے جتنا زور لگا لے، سندھ کے عوام اب ان پر کبھی بھروسہ نہیں کریں گے۔ 28جنوری کولاڑکانہ میں ہونے والا جلسہ ثابت کرے گا کہ سندھ کے عوام تحریک انصاف اور چیئرمین عمران خان کے ساتھ ہیں اور کبھی کسی چور لٹیرے اور کرپٹ مافیا کے متحمل نہیں ہوسکتے۔ انہوں نے مزید کہا کہ سندھ میں اس وقت جمہوری حکومت کے نام پر آمریت قائم ہے۔جو اپنے حقوق کے لیے کھڑا ہوتا ہے، اس پر تشدد کیاجاتا ہے۔پورے سندھ میں مسائل کے انبار لگے ہیں۔ سندھ کے شہری کہیں پانی کی بوند بوند کو ترس رہے ہیں تو کہیں انہیں فراہم کیاجانے والا پانی پینے کے لائق ہی نہیں ہے۔ پاکستان تحریک انصاف کے پی کے میں آئندہ انتخابات میں پہلے سے زیادہ بھاری اکثریت سے کامیاب ہوگی۔ جماعت اسلامی اگر ہم سے اشتراک نہ کرنے کی خواہش رکھتی ہے تو ہماری بھی ایسی ہی خواہش ہے۔ ہر حلقے میں ہمارے ہزاروں لاکھوں کی تعداد میں ووٹرز ہیں۔ اس موقعے پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے تحریک انصاف کے رہنما حلیم عادل شیخ نے کہا کہ سندھ میں کرپشن میں تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے۔ تحریک انصاف جو واحد تبدیلی کی راہ ہے سندھ حکومت اسے پولیس گردی کے ذریعے روکنا چاہتی ہے۔ پیپلز پارٹی دس سالہ دورِ حکومت میں سندھ کے عوام کو پینے کا صاف پانی تک فراہم نہیں کرسکی۔ اس وقت سندھ میں لوگ سیوریج ملا پانی پینے پر مجبور ہیں۔ 2018ء کے عام انتخابات میں پیپلز پارٹی کی آمریت کو سندھ سے تحریک انصاف عوامی ووٹ کی طاقت سے ختم کرکے دکھائے گی۔ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے عمر کوٹ سے تعلق رکھنے والے تحریک انصاف کے رہنما زید ٹالپر نے کہا کہ جنگل کا بھی کوئی قانون ہوتا ہے لیکن سندھ میں وہ بھی نہیں ہے۔ اندرونِ سندھ ہمارے کارکنان کو سیاسی انتقام کا نشانہ بنایاجارہا ہے۔ تحریک انصاف کا سندھ کے مسائل پر آواز اُٹھانا پیپلز پارٹی کو برداشت نہیں ہو رہا ہے۔ پی ٹی آئی میں شمولیت کے بعد سندھ میں مخالفین نے میرے خلاف علم محاذ بلند کیا ہوا ہے۔ مجھے بھی دہشت گردی کے جھوٹے مقدمات میں پھنسانے کی کوشش کی جارہی ہے۔ شفیع محمد سولنگی کو میرے سامنے تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔ پیپلز پارٹی کا ایم پی اے تیمور ٹالپر تحریک انصاف کے لوگوں کو نشانہ بنا رہا ہے۔ پیپلز پارٹی اس قسم کے ہتھکنڈوں سے تحریک انصاف کے کارکنان کے حوصلے پست نہیں کرسکتی۔ میں چیف جسٹس سے اپیل کرتا ہوں کہ عمر کوٹ میں تحریک انصاف کے کارکنان پر جعلی مقدمات اور پیپلز پارٹی کی جانب سے انتقامی کارروائیوں کے مسئلے کا فوری طور پر نوٹس لیا جائے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر