گورنر پنجاب کے صاحبزادے آصف رجوانہ نے سپریم کورٹ سے معافی مانگ لی

گورنر پنجاب کے صاحبزادے آصف رجوانہ نے سپریم کورٹ سے معافی مانگ لی
گورنر پنجاب کے صاحبزادے آصف رجوانہ نے سپریم کورٹ سے معافی مانگ لی

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) گورنر پنجاب رفیق رجوانہ کے صاحبزادے آصف رجوانہ نے سپریم کورٹ آف پاکستان سے خاتون وکیل کو فون کرنے کے معاملے پر غیر مشروط معافی مانگ لی۔

چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں بینچ سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں نجی میڈیکل کالجز میں زائد فیسوں سے متعلق کیس کی سماعت کر رہا ہے۔ دورانِ سماعت گورنر پنجاب رفیق رجوانہ کے صاحبزادے آصف رجوانہ عدالت میں پیش ہوئے اور غیر مشروط معافی مانگ لی جس پر چیف جسٹس پاکستان نے ان کی معافی قبول کرلی۔

واضح رہے کہ عدالت نے خاتون وکیل کو فون کرنے پر آصف رجوانہ کو طلب کیا تھا۔بدھ کے روز کیس کی سماعت کے دوران خاتون وکیل نے سپریم کورٹ میں شکایت کی تھی کہ میڈیکل کالجزکی بھاری فیسوں پر عدالت کوحقائق بتائے تو با اثرشخصیات کے فون آنا شروع ہوگئے۔خاتون کی شکایت پر فیصل آباد میڈیکل کالج کے وائس چانسلر عدالت میں پیش ہوئے اور فون پر رابطوں کی تردید کردی، جس پر ایڈووکیٹ انجم نے اپنا موبائل فون چیف جسٹس کو پیش کردیا، غلط بیانی پر عدالت نے وی سی ڈاکٹرفرید کی سرزنش کی اور انہیں توہین عدالت کا نوٹس جاری کرتے ہوئے عہدے پرکام کرنے سے روک دیا، عدالت نے گورنرپنجاب کے بیٹے کو بھی طلب کرلیا تھا۔ آصف رجوانہ نے آج (جمعرات کو ) عدالت کو بتایا کہ انہوں نے خاتون وکیل کو کوئی دھمکی نہیں دی بلکہ ذاتی تعلق کی بنا پر فون کال کی تھی۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -علاقائی -پنجاب -لاہور -