چین نے دنیا کی سب سے پہلی بجلی بنانے والی سڑک آزمائش کیلئے کھول دی

چین نے دنیا کی سب سے پہلی بجلی بنانے والی سڑک آزمائش کیلئے کھول دی
چین نے دنیا کی سب سے پہلی بجلی بنانے والی سڑک آزمائش کیلئے کھول دی

  


بیجنگ (ڈیلی پاکستان آن لائن )چین نے آج دنیا کی سب سے پہلی ایک کلومیٹر طویل بجلی پیدا کرنے والی سڑک ’سولر ایکسپریس وے ‘ آزمائشی بنیادوں پر کھول دی ہے ۔

تفصیلات کے مطابق سولر ایکسپریس وے صوبہ شانگ ڈونگ کے دالرحکومت ’ژی نان ‘ کے گرد بنائی ہے جس کے نیچے ’سولر پینل ‘بچھائے گئے ہیں ،سڑک کی سطح شفاف بنائی گئی ہے اور یہ بہت زیادہ وزن برداشت کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے ،سطح کے شفاف ہونے کے باعث سورج کی کرنیں سیدھی سڑک کے نیچے بچھے سولر پینل سے ٹکراتی ہے جس سے بجلی پیدا ہو تی ہے ۔سولر پینلز پانچ ہزار 875 مربع میٹر پر پھیلے ہوئے ہیں جو کہ سال میں دس لاکھ کلو واٹ بجلی پیدا کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں ۔

’کیلو ٹرانسپورٹیشن ڈولپمنٹ گروپ‘ کے چیئرمین کا کہناہے کہ اس پراجیکٹ کے ذریعے سولر فارمز کی تعمیر کیلئے جگہ کا استعمال نہیں ہوگا جبکہ یہ ٹرامیشن کے فاصلے کو بھی کم کرے گا ۔اس پراجیکٹ سے آزمائشی بنیاد پر جو بجلی پیدا کی جائے گی اسے سڑک کی لائٹس ،سائن بورڈز ،نگرانی کرنے والے کیمروں کو چلانے کیلئے استعمال کیا جائے گا اور اضافی بجلی کو ریاس کے گرڈ سٹیشن میں شامل کر دیا جائے گا ۔چین کی جانب سے بنایا جانے والا یہ دنیا کا سب سے پہلا پراجیکٹ ہے جسے پوری دنیا میں بے انتہائی پذیرائی مل رہی ہے ۔

مزید : اہم خبریں /بین الاقوامی /سائنس اور ٹیکنالوجی