مسلم لیگ (ن) کا پارٹی سیکرٹریٹ پر چھاپے اور واجد ضیا کیخلاف قانونی چارہ جوئی کا اعلان 

      مسلم لیگ (ن) کا پارٹی سیکرٹریٹ پر چھاپے اور واجد ضیا کیخلاف قانونی چارہ ...

  



لاہور (کر ائم رپو رٹر) جج ویڈیو سکینڈل کیس میں لیگی رہنما عطاء اللہ تارڑ ایف آئی اے کے روبرو پیش ہوگئے، پیشی کے موقع پر لیگی کا ر کنوں نے ایف آئی اے د فتر کے باہر احتجاج کیا۔ڈائریکٹر بابر بخت، ایڈیشنل ڈائریکٹر ساجد اکرم، اسسٹنٹ ڈائریکٹر اعجاز شیخ نے تحقیقا ت کیں۔ لیگی رہنما عطاء اللہ تارڑ نے ڈیڑھ گھنٹے تک سوالات کے جوابات دئیے۔علاوہ ازیں مسلم لیگ (ن) نے پارٹی کے مرکزی سیکرٹریٹ ماڈل ٹاؤن پر چھاپے کے خلاف ایف آئی اے کے دفتر کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا۔مسلم لیگ (ن) نے ڈی جی ایف آئی اے واجد ضیا کی تقرری کو سیاسی قرار دیتے ہوئے انہیں عہدے سے ہٹانے کیلئے قانونی چارہ جوئی کرنے کا اعلان کر دیا۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عطا تارڑنے کہا کہ جج ارشد ملک کے حوالے سے سپریم کورٹ کے ریمارکس سب کے سامنے ہیں لیکن انہیں کوئی نہیں پوچھتا نہیں،ایف آئی اے نے ابھی تک مجھ سے کوئی تحریری بیان نہیں لیااور صرف زبانی سوالات پوچھے گئے۔ انہوں نے کہا کہ میں اس کیس میں اگست میں اپنا بیان جمع کر اچکا ہوں۔ ہم ڈنکے کی چوٹ پر کہتے ہیں کہ واجد ضیا کی ایف آئی اے میں تقرر ی سیاسی ہے اور انہیں مسلم لیگ (ن) کو ٹف ٹائم دینے کا ٹاسک سونپا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بشیر میمن کی پر ی میچور ریٹائرمنٹ کا معاملہ بھی سب کے سامنے ہے۔ عمران نیازی کو وفاقی اداروں میں مداخلت کی عادت پڑ چکی ہے لیکن ہم ان کے فسطائیت اور اوچھے ہتھکنڈوں کا ڈٹ کرمقابلہ کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ واجد ضیا کو ان کے عہدے سے ہٹانے کے لئے قانونی چارہ جوئی کریں گے اور اس کے لئے مشاورت جاری ہے۔ خواجہ عمران نذیر نے کہاکہ عمران نیازی کہتے تھے کہ میں اداروں کو سیاست سے پاک کروں گا لیکن نیب اورایف آئی اے کو سیاسی مخالفین کے خلاف استعمال کیا جارہا ہے۔ بشیر میمن کو ڈی جی ایف آئی اے کے عہدے سے ہٹانا اور واجد ضیا کی تعیناتی سے ثابت ہوتا ہے کہ دال میں کچھ کالا نہیں بلکہ ساری دال ہی کالی ہے۔لیگی رہنما عطا تارڑ کی ایف آئی اے میں پیشی اور (ن) لیگ کی جانب سے احتجاج کی کال کے پیش نظر پولیس کی بھاری نفری نے صبح سویرے ہی ایف آئی اے کی عمارت کی طرف جانے والے راستوں کو بیرئیر اور رکاوٹیں لگا کر بند کر دیا جس کی وجہ سے عام شہریوں کو شدید مشکلات کا سامناکرنا پڑا۔ 

عطا تارڑ/مسلم لیگ

مزید : صفحہ اول


loading...