قائد اعظم کے پاکستان میں ریاست کمزور طبقات کے حقوق کی محافظ تھی، ڈاکٹرپال

  قائد اعظم کے پاکستان میں ریاست کمزور طبقات کے حقوق کی محافظ تھی، ڈاکٹرپال

  



پشاور (سٹی رپورٹر)آل پاکستا ن منارٹیز آلائنس کے چیرمین اور سابق وفاقی وزیر ڈاکٹر پال بھٹی نے کہا ہے موجودہ حکومت نے اپنے منشور میں وطن عزیز کو قائد کا پاکستان بنانے کا دعوی کیا تھا، قائد اعظم کے پاکستان میں ریاست کمزور طبقات کے حقوق کا محافظ تھا، لیکن موجودہ حکومت اپنے وعدے کے مطابق ملک کو قائد اعظم کا پاکستان بنانے نے بجائے اقلیتوں کو کمزور بنا رہی ہے اور اقلیتی طبقے کے ملکیتی تعلیمی اداروں کو اپنے کنٹرول میں لے رہی ہے، پشاور پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر پال بھٹی نے حکومت پاکستان اور اعلی ترین عدلیہ سے مطالبہ کیا کہ اقلیتی برادری کے ملکیتی ادارے دوبارہ اقلیتوں کے حوالے کئے جائیں، انہوں نے کہا ملکی تعمیر و ترقی میں ان اداروں نے اہم کردار ادا کیا ہے اور یہاں کے بہترین نظام تعلیم کے بدولت یہاں سے فارغ التحصیل طلبا نے مختلف حیثیتوں میں ملک کی؛خدمت کی ہے، انہوں نے مطالبہ کیا اقلیتوں کو دوہرے ووٹ کا حق دیا جائے تاکہ ان کے حقیقی نمائندے ایوانوں میں پہنچ کر ان نمائندگی کا حق ادا کر سکیں۔انہوں نے مزید کہا کہ اقلیتی مخصوص نشستوں کے لئے بھی ووٹ کے زریعے الیکشن کرائے جائیں ناکہ سیاسی جماعتیں اپنے کارکنوں کو بذریعہ سلیکشن ایوانوں میں بھیجیں۔ایسے افراد کسی بھی صورت اقلیتی کمیونٹی کی نمائندگی نہیں کر سکتے۔اس بشپ آف پشاور الیگزیندر سرفراز پیٹ سمیت مسیحی برادری سے تعلق رکھنے والے خواتین و حضرات کی بڑی تعداد بھی موجود تھے، بعد آزاں کرسمس کا کیک بھی کاٹا گیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر