ٹڈی دل کی سرولنس کیلئے ٹیمیں تشکیل دے دیں، ڈی جی زراعت 

ٹڈی دل کی سرولنس کیلئے ٹیمیں تشکیل دے دیں، ڈی جی زراعت 

  



لاہور(این این آئی)سندھ کے علاقوں سے مکڑی کا ایک دل چولستان میں داخل ہوا جس نے فصلوں کی کاشت کے چند دیہاتوں میں جزوی نقصان پہنچایا ور محکمہ زراعت کے تحت ٹڈی دل کے کنٹرول کے سلسلہ میں سرگرمیاں جاری ہیں ان خیالات کا اظہارڈاکٹر انجم علی ڈائریکٹر جنرل زراعت (توسیع)نے ٹڈی دل کے حملہ کا جائزہ لینے کے لیے سیکرٹری زراعت پنجاب واصف خورشید لیاقت پور اور خان پور کے مختلف چکوک کے دورہ کے دوران کاشتکاروں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہماری فیلڈ ٹییمیں کاشکاروں کی رہنمائی اور مدد کیلیے ہمہ وقت موجود ہیں اور کسی بھی نا گہانی صورتحال سے نہ بردآزما ہونے کے لیے ہم بالکل تیا ر ہیں اور فصلوں کی کاشت کے علاقوں میں ٹڈی دل کے حملہ کے خطرہ اور نقصان کے پیش نظر تمام انتظامات مکمل کر لیے گئے ہیں اس سلسلہ میں حکومت پنجاب کے تحت تمام ممکنہ وسائل بروکار لا ئے جا رہے ہیں۔ اس موقع پر ڈائریکٹر زراعت (توسیع) جمشید خالد سندھو ودیگر افسران بھی ان کے ہمراہ تھے۔ڈائریکٹر جنرل زراعت (توسیع)نے مزید کہا کہ ٹڈی دل سندھ سے ہواؤں کا رخ تبدیل ہونے کی وجہ سے چولستان میں داخل ہوئی جہاں سے چند گروہ فصلوں کے علاقوں میں لینڈ کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ ٹڈی دل کے ممکنہ حملے کے پیش نظر محکمہ زراعت حکومت پنجاب نے مکمل تیاری کی ہوئی تھی۔

 ٹڈی دل کی سرولنس وکنٹرول کے لیے بروقت ٹیمیں تشکیل دے دی گئیں۔ ہنگامی بنیادوں پر مز ید پیسٹی سائیڈز خرید کی جارہی رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ روزانہ کی بنیاد پر ٹڈی دل کے کنڑول کے لیے سپرے کئے جار ہے ہیں۔ ٹڈی دل کو چولستان تک محدور رکھنے میں ہماری حکمت عملی بڑی کامیاب رہی فصلو ں کی کاشت کے علاقے میں صرف چند ایک غول فلائبر (Flybar) سٹیج والے آئے جنہوں نے فصلوں کو نقصان نہیں پہنچایا۔انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت کے تعاون سے 5سو ملین روپے کی لاگت سے ٹڈی دل کے کنٹرول کے لیے منصوبہ پر عملدرآمد جاری ہے۔

مزید : کامرس