نیب ترمیمی آرڈیننس نافذ، وفاقی کابینہ سے منظوری کے بعد صدر مملکت نے دستخط کر دیئے، نیب کو تاجر برادری سے الگ کر دیا: عمران خا ن

نیب ترمیمی آرڈیننس نافذ، وفاقی کابینہ سے منظوری کے بعد صدر مملکت نے دستخط کر ...

  



اسلام آباد(سٹاف رپورٹر

مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)صدر عارف علوی نے نیب ترمیمی آرڈیننس پر دستخط کردیے جس کے بعد نیب کا نیا ترمیمی آرڈیننس نافذالعمل ہو گیا۔ اس سے قبل وفاقی کابینہ نے بذریعہ سمری سرکولیشن قومی احتساب بیورو ترمیمی آرڈیننس 2019 کی منظوری دی تھی ۔آرڈیننس کے مطابق محکمانہ نقائص پر سرکاری ملازمین کے خلاف نیب کارروائی نہیں کرے گا، ایسے ملازمین کے خلاف کارروائی ہوگی جن کے خلاف نقائص سے فائدہ اٹھانے کے شواہد ہوں گے۔آرڈیننس میں کہا گیا ہے کہ سرکاری ملازم کی جائیداد کو عدالتی حکم نامے کے بغیر منجمد نہیں کیا جا سکے گا اور اگر تین ماہ میں نیب تحقیقات مکمل نہ ہوں تو گرفتار سرکاری ملازم ضمانت کا حقدار ہوگا مگر سرکاری ملازم کے اثاثوں میں بے جا اضافے پر اختیارات کے ناجائز استعمال کی کارروائی ہو سکے گی۔اس کے علاوہ نیب 50 کروڑ سے زائد کی کرپشن اور اسکینڈل پر کارروائی کر سکے گا۔ترمیمی آرڈیننس کے مطابق ٹیکس، اسٹاک ایکسچینج، آئی پی اوز سے متعلق معاملات میں نیب کا دائرہ اختیار ختم ہوگیا، ان تمام معاملات پر ایف بی آر، ایس ای سی پی اور بلڈنگ کنٹرول اتھارٹیز کارروائی کریں گی گے۔علاوہ ازیں زمین کی قیمت کے تعین کے لیے ایف بی آر یا ڈسٹرکٹ کلکٹر کے طے کردہ ریٹس سے نیب، کارروائی کے لیے رہنمائی لے گا۔

ترمیمی آرڈیننس

کراچی (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ملک میں تاجر برادری کا ایک بڑا مسئلہ نیب کی مداخلت تھی تاہم آرڈیننس کے ذریعے نیب کو تاجر برادری سے علیحدہ کر دیا ہے،پاکستان اسٹاک ایکسچینج کی تقسیم انعامات کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ تاجر برادری وسائل پیدا کرتی ہے، وہ قوم آگے نہیں بڑھ سکتی جہاں تجارتی طبقہ مسائل سے دوچار رہے، جبکہ اس ضمن میں حکومت کا کام سہولیات اور سازگار ماحول فراہم کرنا ہے۔انہوں نے کہا کہ تاجر برادری کا ایک بڑا مسئلہ قومی احتساب بیورو (نیب) کی مداخلت تھی اور تاجر برادری نے اس مسئلے کا برملا اظہار کیا۔عمران خان نے تاجروں کو مبارک باد دیتے ہوئیکہا کہ 'آرڈیننس کے ذریعے نیب کو تاجر برادری سے علیحدہ کر دیا ہے'۔ان کا کہنا تھا کہ 'نیب کو صرف پبلک آفس ہولڈرز کی اسکروٹنی کرنی چاہیے، نیب تاجر برادری کے لیے بہت بڑی رکاوٹ تھی'۔انہوں نے کہا کہ 2023 تک یہ بھولنے تک نہیں دوں گا کہ ہمیں کس حالت میں پاکستان ملا، گزشتہ حکومتوں کے کارنامے بتاتا رہوں گا۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ 30 ہزار ارب روپے کا قرضہ ملا تھا، ہم اپنی کارکردگی بھی بتائیں گے اور یہ بھی بتاؤں گا کہ کس طرح کا پاکستان اور ادارے ملے تھے۔انہوں نے کہا کہ ہماری معاشی ٹیم ہر وقت موجود ہے اور کوشش کروں گا کہ دو، تین مہینے میں ایک مرتبہ تاجر برادری سے ضرور ملوں۔ان کا کہنا تھا کہ تاجر برادری کی پریشانی دور کرنا پاکستان کی ضرورت ہے، سرمایہ کار پیسہ بنائیں تاکہ دیگر سرمایہ کار ملک میں آئیں۔وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ فلاحی ریاست کا تصور لے کر چین نے 30 برس میں 70 کروڑ لوگوں کو غربت کی لکیر سے نکلا۔انہوں نے کہا کہ اسی طرح یورپ اور امریکا جیسے دیگر ممالک میں ریاست نے اپنے کمزور طبقے کی ذمہ داری لے لی اور یہ ہی فلاحی ریاست کی مثال ہے۔ وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ پاکستان کو ترقی میں سب سے آگے لے جانا چاہتے ہیں، پاکستان جس مقصد کے لیے بنا تھا اگر ہم اپنے تمام کام اس مقصد کو مدنظر رکھتے ہوئے کریں تو ہمیں کامیابی حاصل ہوگی اور معاشی ترقی کے بغیر کسی بھی ملک کی کامیابی ممکن نہیں ہے جب کہ ریاست اپنے کمزور طبقے کی ذمہ داری لیتی ہیقبل ازیں صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی اور وزیر اعظم عمران خان ایک روزہ دورے پر کراچی پہنچے۔گورنر سندھ عمران اسمٰعیل نے کراچی ایئرپورٹ پر صدر مملکت اور وزیراعظم کا استقبال کیا۔وزارت عظمی کا منصب سنبھالنے کے بعد عمران خان کا یہ کراچی کا پانچواں دورہ ہے جہاں انہقں نے گورنر ہاؤس میں مصروف ترین دن گزارا۔دورہ کراچی کے موقع پر وزیراعظم عمران خان تاجر برادری کے رہنماؤں، پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے ارکان اسمبلی اور دیگر وفود سے ملاقاتیں کیں۔زیراعظم عمران خان سے متحدہ عرب امارات کے وزیر شیخ نہیان بن مبارک النہیان نے ملاقات کی جس کے دوران دونوں ممالک کے باہمی تعلقات سمیت دیگر امور پر گفتگو ہوئی۔وزیراعظم نے شیخ نہیان بن مبارک النہیان کو مسئلہ کشمیر کی تازہ ترین صورتحال سے آگاہ کیا اور بھارت میں مودی سرکار کی جانب سے حالیہ متنازع شہریت بل سے متاثرہ مسلمان شہریوں کے ملک گیر مظاہروں اور بھارتی پولیس کی فائرنگ سے ہونیوالی شہادتوں پر بھی تشویش کا اظہار کیا۔معزز مہمان شیخ نہیان بن مبارک النہیان نے خطے میں قیام امن سے متعلق پاکستان کی کوششوں کی تعریف کی۔

عمران خان

مزید : صفحہ اول