6 روز بعد کھلنے والے سی این جی سٹیشن پھر بند، سندھ میں گیس کا شدید بحران

6 روز بعد کھلنے والے سی این جی سٹیشن پھر بند، سندھ میں گیس کا شدید بحران
6 روز بعد کھلنے والے سی این جی سٹیشن پھر بند، سندھ میں گیس کا شدید بحران

  



کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن) شہر قائد سمیت صوبے بھر میں گیس کا شدید بحران ختم ہونے میں نہیں آرہا، گیس پریشر میں کمی کے باعث 6 روز بعد کھلنے والے سی این جی سٹیشن پھر بند ہو گئے۔

تفصیلات کے مطابق سندھ میں 6 دن بعد کھلنے والے سی این جی سٹیشنز 8 گھنٹے بعد ہی بند ہو گئے، اس دوران کسی کو سی این جی ملی تو کوئی صرف ہاتھ ملتا رہ گیا، خیال رہے کہ سی این جی سٹیشنز گزشتہ رات سے صرف 8 گھنٹے کےلئے کھولے گئے تھے۔فیول سٹیشنز پر رات بھر گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگی رہیں، کئی گاڑی والوں کو طویل انتظار کے بعد بھی سی این جی نہ ملی، کراچی کے رہایشی علاقوں میں گیس پریشر بدستور کم ہونے سے گھروں میں کھانا پکانا بھی دشوار ہو گیا، پنجاب میں بھی گیس کا بحران برقرار ہے۔

سی این جی سٹیشنز مالکان کا کہنا تھا کہ گیس پریشر نہیں ہے جس کے باعث سٹیشنز بند کر رہے ہیں، دوسری طرف سخت سردی میں بھی سی این جی سٹیشنز پر رات بھر گاڑیوں کی طویل قطاریں لگی رہیں، رش کے باعث شہریوں کی بڑی تعداد گاڑیوں میں فیولنگ نہ کرا سکی۔

سندھ میں گیس کا بحران کیوں ہے؟ وفاقی وزیر توانائی نے وجہ بتا دی، عمر ایوب کہتے ہیں صوبائی حکومت گیس پائپ لائنوں کےلئے راستہ نہیں دے رہی جس کی وجہ سے کام مکمل نہیں ہوا، سندھ حکومت ایل این جی خریدنے کےلئے بھی تیار نہیں، ایس ایس جی سی کو گیس پریشر بہتر کرنے کی ہدایت کر دی ہے۔

مزید : اہم خبریں /علاقائی /سندھ /کراچی