'ہم پانچ سال پورے کرنے نہیں آئے بلکہ ۔۔۔' وزیراعظم عمران خان نے ایسی بات کردی کہ آپ بھی داد دیں گے

'ہم پانچ سال پورے کرنے نہیں آئے بلکہ ۔۔۔' وزیراعظم عمران خان نے ایسی بات کردی ...
'ہم پانچ سال پورے کرنے نہیں آئے بلکہ ۔۔۔' وزیراعظم عمران خان نے ایسی بات کردی کہ آپ بھی داد دیں گے

  



پشاور(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعظم پاکستان عمران خان نے کہا ہے کہ اسٹیٹس کواپنے مفادات کیلئے اصلاحات کیخلاف مزاحمت کرتے ہیں۔ملک میں دوقسم کی حکومتیں آتی ہیں ایک وہ جو ہر صورت پانچ سال مکمل کرنے کی تگ و دو کرتی ہے دوسری وہ جو اصلاحات کرتی ہے۔عمران نے کہا کہ ہماری حکومت وہ ہے جو اصلاحات کرنے کیلئے آئی ہے۔ ،کئی جماعتیں اپنی حکومت بچانے کیلئے اصلاحات سے پیچھے ہٹ جاتی ہیں لیکن ہم اصلاحات سے ہرگز نہیں گھبرائیں گے۔

پشاور میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ بیس سال میں اوورسیز پاکستانی رہا۔اوورسیزپاکستانیوں سے میرا قریبی تعلق ہے۔اوورسیز پاکستانیوں کے مسائل کو سمجھتا ہوں۔اوورسیز پاکستانیوں کے حل کرنے کیلئے حکومت سنجیدہ ہے۔کینسرہسپتال کیلئے شمالی امریکا گیاجہاںمیرے کزن نوشیرواں برکی نے میری مدد کی۔

عمران خان نے کہا ہسپتالوں کی بہتری کی کوشش کرتے ہیں تو ایک مافیا رکاوٹ ڈالتاہے۔وہ پرانے نظام کے تحت کرپشن چاہتے ہیں اس لئے اصلاحات کی کوشش پر کہتے ہیں کہ ہسپتالوںکو پرائیویٹ کیاجارہاہے حالانکہ وہ جانتے ہیں کہ ہسپتالوں کو پرائیویٹ نہیں کیاجارہا۔پرانا مافیا پرانے نظام سے فائدہ اٹھانے کیلئے صحت ،ایف بی آراور دیگر اداروں میں تبدیلی کی کوشش کواسٹیٹس کو کی مزاحمت کا سامناکرنا پڑتا ہے۔لوگ ٹیکس نہیں دینا چاہتے اس لئے ٹیکس نظام میں بہتری کی مخالفت کرتے ہیں۔

عمران خان نے کہا ملک میں دو قسم کی حکومتیں آتی ہیں ایک وہ جو ہر صورت پانچ سال پورا کرنا چاہتی ہے، جبکہ ہم وہ حکومت لائے ہیں جو اصلاحات کرنا چاہتی ہے،ہمیں اس سے زیادہ مزاحمت کاسامنا کرناپڑسکتا ہے۔اس ساری کارروائی کے دوران مسائل آتے ہیں ،کئی جماعتیں اپنی حکومت بچانے کیلئے اصلاحات سے پیچھے ہٹ جاتی ہیں لیکن ہم اصلاحات سے ہرگز نہیں گھبرائیں گے۔ترکی اور ملائیشیا کا حال ہم سے خراب تھا لیکن وہ اصلاحات کرکے ان مشکلات سے نکل گئے۔

انہوں نے کہا دوہزار انیس  معیشت سنبھالنے اور بجٹ خسارے سے نکلنے کا سال تھا جبکہ دوہزار بیس خوشحالی کا سال ہوگا۔

عمران خان نے کہا کہ ہمیں امریکا میں اپنی لابی مضبوط کرنی ہے۔وہاں بھارتی لابی پاکستانی لابی سے زیادہ طاقتور ہے۔بھارت مقبوضہ کشمیرمیں ظلم روارکھے ہوئے ہے۔لاکھوں مسلمانوں کو اوپن جیل میں قید کردیا گیاہے۔مغربی اخباروں میں پہلی بار بھارتی فاشسٹ حکومت کو بے نقاب کیاجارہاہے۔بی جے پی حکومت نے بھارت میں وہی طرز حکمرانی اپنالی ہے جو ہٹلر نے یہودیوں کے خلاف اپنائی تھی۔عمران خان نے پاکستان ڈاکٹرز کی تنظیم اپنا کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ وہ امریکا میں پاکستانی لابی کی مضبوطی کیلئے کام کریں۔عمران خان نے کہا بھارتی حکومت کے اقدامات کیخلاف بھارت کے باشعور اور پڑھے لکھے ہندو خود اٹھ کھڑے ہیںبھارت اپنے اندرونی انتشار سے توجہ ہٹانے کیلئے آزاد کشمیر میں ایڈونچر کی کوشش کرسکتا ہے۔ایسی کسی بھی کارروائی سے قبل ہمیں دنیا کو بھارتی مقاصد سے آگاہ کرنا ہوگا۔

مزید : اہم خبریں /قومی


loading...