لوگوں کی فراخدلی نے 7 سالہ پاکستانی بچے کی جان بچا لی

لوگوں کی فراخدلی نے 7 سالہ پاکستانی بچے کی جان بچا لی
لوگوں کی فراخدلی نے 7 سالہ پاکستانی بچے کی جان بچا لی

  



کوئٹہ(مانیٹرنگ ڈیسک) برطانیہ میں بیمار پڑے 7سالہ پاکستانی بچے کے والد کی اپیل پر لوگوں نے اتنی رقم اسے دے دی کہ سن کر آپ کہیں گے کہ انسانیت ابھی دنیا سے گئی نہیں ہے۔ ویب سائٹ ’پڑھ لو‘ کے مطابق کوئٹہ کا صفوان زمان نامی یہ بچہ دل اور پھیپھڑوں کی ایک پیچیدہ بیماری میں مبتلا ہے جس کی وجہ سے اس کی سانس گاہے رک جاتی ہے اور وہ مسلسل ایک تکلیف میں زندگی گزار رہا ہے۔ پہلے اس کا علاج کراچی کے آغا خان ہسپتال میں ہو رہا تھا تاہم ڈاکٹروں نے کہا کہ اسے برطانیہ لیجانا ناگزیر ہے ورنہ اس کے دل اور پھیپھڑوں کو مزید نقصان پہنچتا رہے گا اور اس کا بچنا مشکل ہو جائے گا۔

اس پر صفوان کے والد زمان نے اپنے تمام اثاثے بیچ ڈالے، جن سے اسے 40ہزار پاﺅنڈ کی رقم حاصل ہو گئی۔ ڈاکٹروں کے مطابق برطانیہ میں صفوان کے علاج پر اتنی رقم ہی خرچ ہونی تھی تاہم جب زمان اپنے بیٹے کو لے کر ہارلے سٹریٹ کلینک پہنچا تو معلوم ہوا کہ یہ رقم کم ہے اور لگ بھگ اتنی ہی مزید رقم کی ضرورت ہو گی۔ یہ سن کر زمان پریشان ہو گیا اوراس نے پاکستان میں ایک نجی ٹی وی چینل سے رابطہ کیا۔ ٹی وی چینل نے زمان کی پریشانی کے متعلق لوگوں کو آگاہ کیا اور اس کی طرف سے چندے کی اپیل کی۔ اس اپیل پر پاکستان اور برطانیہ سے لوگوں نے مطلوبہ رقم سے دوگنا زیادہ رقم دے دی۔ برطانیہ کی ایک فلاحی تنظیم بھی میدان میں آ گئی اور صفوان کے علاج کے لیے چندہ جمع کیا۔ اب صفوان کا ہارلے سٹریٹ کلینک میں علاج جاری ہے۔ زمان نے علاج کی رقم پوری ہونے پر کہا ہے کہ ”میں نجی ٹی وی چینل اور چندہ دینے والے لوگوں کا تہہ دل سے مشکور ہوں۔ ان کی وجہ سے میرے بچے کا علاج ممکن ہو پایا۔ ورنہ میں سب کچھ بیچ کر برطانیہ آ گیا تھا اور اب میرے پاس اور کوئی راستہ نہیں تھا۔ اگر لوگ میری مدد کو نہ آتے تو نجانے یہاں ہمارا کیا ہوتا۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس /علاقائی /بلوچستان /کوئٹہ