رانا شمیم جعلسازی سے ہائیکورٹ کے ایڈیشنل جج بنے، اے آر وائی نیوز کا دعویٰ

رانا شمیم جعلسازی سے ہائیکورٹ کے ایڈیشنل جج بنے، اے آر وائی نیوز کا دعویٰ
رانا شمیم جعلسازی سے ہائیکورٹ کے ایڈیشنل جج بنے، اے آر وائی نیوز کا دعویٰ

  

کراچی  (ڈیلی پاکستان آن لائن) نجی ٹی وی اے آر وائی نیوز نے دعویٰ کیا ہے کہ گلگت بلتستان کے سابق چیف جج رانا شمیم جعلسازی سے سندھ ہائیکورٹ کے ایڈیشنل جج بنے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق جسٹس (ر) رانا شمیم نے سندھ ہائیکورٹ کا ایڈیشنل جج بننے کیلئے اپنی عمر چھپائی۔ اس وقت کے چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس انور ظہیر جمالی نے انہیں مستقل جج بنانے کی تجویز مسترد کردی تھی۔

 اس حوالے سے سابق چیف جسٹس نے گورنر سندھ کو خط بھی لکھا تھا جس میں کہا تھا کہ  رانا شمیم  نے ایڈیشنل جج بننے کیلئے اپنی عمر چھپائی،  انہوں نے بار کونسل میں اپنی پیدائش کا سال 1946 سے تبدیل  کراکے 1950 کرایا ۔ اس کے علاوہ انہیں ایڈیشنل جج بنانے کے حوالے سے کوئی سمری ریکارڈ پر موجود نہیں ہے۔

جسٹس (ر) انور ظہیر جمالی نے اپنے خط میں مزید لکھا کہ بطور ایڈیشنل جج رانا شمیم کی ایمانداری مشتبہ اور قابلیت مایوس کن رہی  اس لیے وہ سندھ ہائیکورٹ کا مستقل جج بننے کے اہل نہیں ہیں۔ 

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -