ڈیل نہ ہونے پر: پولیس تشدد سے ملزم ہلاک، ڈی پی او کی کاغذی کارروائی، صرف چوکی عملہ تبدیل 

ڈیل نہ ہونے پر: پولیس تشدد سے ملزم ہلاک، ڈی پی او کی کاغذی کارروائی، صرف چوکی ...

  

  مظفرگڑھ (بیورو رپورٹ)تھانہ خان گڑھ کی حدود پولیس چوکی مونڈکا میں شراب کے مقدمہ میں گرفتار ملزم مبینہ پولیس تشدد سے ہلاک ہوگیا، انچارج ڈی پی او مظفرگڑھ نے کارروائی کی بجائے انچارج چوکی مونڈکا سمیت پورا عملہ صرف تبدیل کر دیا، اس سلسلے میں ملنے والی اطلاعات کے مطابق پولیس چوکی مونڈکا نے گزشتہ روز قصبہ مونڈکا کے رہائشی ریاض جھبیل کو شراب کے نشہ میں دھت ہونے پر پکڑا اور اسے چوکی (بقیہ نمبر13صفحہ6پر)

لے گئے، اس دوران پولیس اہلکار مبینہ طور پر ریاض پر تشدد اور اس کے لواحقین سے ڈیل کرتے رہے، تاہم معاملہ فائنل نہ ہو سکا جبکہ اس دوران زیر حراست ریاض جھبیل کی حالت بگڑ گئی، جو چوکی میں ہی دم توڑ گیا، جس پر پولیس ملازمین کے ہاتھ پاں پھول گئے، چوکی انچارج اے ایس آئی اللہ بخش، ہیڈ کانسٹیبل عبدالرحمن نے معاملہ کے بارے میں ایس ایچ او تھانہ خان گڑھ آصف ذولفقار کو بتایا، جن کی مشاورت سے پولیس نے مبینہ طور پر ڈرا دھمکا کر متوفی کی نعش پولیس نے اس کے ورثاء کے حوالے کر دی، جبکہ انچارج ڈی پی او مظفرگڑھ احمد فراز نے ملوث پولیس ملازمین کے خلاف محکمانہ کارروائی کرنے کی بجائے خاموشی سے  پولیس چوکی کا تمام عملہ تبدیل کر دیا اور معاملہ سلجھا دیا، نیا چوکی انچارج مونڈکا سب انسپکٹر سہیل احمد کو تعینات کر دیا، جس پر قانون پسند شہری حلقوں نے حیرت کا اظہار کرتے ہوئے آئی جی پولیس پنجاب را سردار علی اور ایڈیشنل آئی جی پولیس جنوبی پنجاب سے نوٹس لینے اور واقعہ کے حقائق سامنے لانے کا مطالبہ کیا ہے۔

پولیس تشدد

مزید :

ملتان صفحہ آخر -