بنوں،کرم تنگی ڈیم کے عوام کی مراعات کی عدم فراہمی پر ڈیم نہ بننے کی دھمکی 

بنوں،کرم تنگی ڈیم کے عوام کی مراعات کی عدم فراہمی پر ڈیم نہ بننے کی دھمکی 

  

بنوں (بیورورپورٹ) کرم تنگی ڈیم مسترد،تحفظات دور نہ کئے اوربنوں کے عوام کو مراعات کی ضمانت نہ دی گئی تو ڈیم بننے نہیں دیں گے۔ڈیم بنانا ہے تو بنوں کے عوام کو ان کے نقصانات کے بدلے میں روزگار،بجلی میں رعایت،اور ان کا قانونی پانی دیا جائے بصورت دیگر بنوں کے عوام جاری احتجاجی تحریک کو وسعت دیں گے۔ منڈان گرینڈ کا اعلان۔منڈان میں احتجاجی گرینڈ جرگہ سے خطاب کرتے ہوئے کرم تنگی ڈیم تحریک کے روح رواں پیر قیصر عباس شاہ،چیئرمین ملک حزب اللہ خان،فرمان اللہ میرا خیل،ملک میر قد آیاز خان، ملک مقصوم خان، فرحت علی شاہ،پی ٹی ائی راہنما شب نیاز خان، گل پیر، جاوید خان، پیر محمود، مولانا قدرت اللہ،ملک حیات خان،حاجی فراز خان،نثار خان منڈان ملک ربانی خان،حاجی جہانزیب خان  نے کیا انہوں نے کہا کہ کرم تنگی ڈیم قومی منصوبہ ضرور ہے لیکن اس سے بنوں کو نقصان زیادہ اور فائدہ کم پہنچ رہاہے ڈیم کی تعمیر بنوں کا پانی ادھا ہو جائے گا اور بنوں کی زمینیں جو پہلے سے کمی کی وجہ سے بنجر ہو رہے ہیں مزید بنجر ہوجائے گی دریائے کم پر تین ڈیم تعمیر ہوں گے ابھی ایک ڈیم بنا ہے لیکن دریائے کرم میں پانی ابھی سے خشک ہو چکا ہے۔مقررین نے کہا کہ بنوں کے عوام کو کرم تنگی کے حوالے سے بیدار کرنا ضروری ہے کیونکہ یہ معاشی قتل کے مترادف ہے مقررین نے مطالبہ کیابنوں کے عوام کو یہاں روزگار فراہم کیا جائے یہاں صنعتی زون قائم کیا جائے بنوں کے عوام کے 70 سال کے بجلی کے واجبات معاف کئے جائیں کیونکہ جب ڈیم پر 17 ہزار ارب ڈالرز خرچ ہو سکتے ہیں تو بنوں کے عوام کے لئے یہ مراعات کوئی بڑی بات نہیں اس کے علاوہ بنوں کو ان کے رواجی اور قانونی پانی کی ضمانت دی جائے اور اگر ہمارے ساتھ معاہدہ نہ کیا تو ہم احتجاج کو وسعت دیں گے انہوں نے دھمکی دی کہ اگر بنوں کے عوام کو مراعات نہ دئے گئے جو کہ ان کا حق ہے تو بنوں کے عوام کرم تنگی ڈیم کو کالا باغ ڈیم بنا دیں گے اور اس کو کسی صورت بھی بننے نہیں دیں گے  

مزید :

پشاورصفحہ آخر -