پاکستان لینڈ پورٹ اتھارٹی کا قیام خوش آئند ہے،سرحد چیمبر 

پاکستان لینڈ پورٹ اتھارٹی کا قیام خوش آئند ہے،سرحد چیمبر 

  

پشاور(سٹی رپورٹر)سرحد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر حسنین خورشید احمد نے پاکستان لینڈ پورٹ اتھارٹی کے قیام کا خیر مقدم کیا ہے اور کہا ہے کہ حکومتی اقدام سے تاجروں کو ون ونڈو آپریشن کے تحت بروقت سہولیات کی فراہمی یقینی ہوگی بلکہ پاک افغان باہمی تجارت سمیت وسطی ایشیاء کی ریاستوں کے ساتھ تجارت میں بھی تیزی اور آسانیاں پیدا ہوں گی۔ تاہم انہوں نے کہاکہ بارڈرز پر سہولیات کی فراہمی بارڈرز مینجمنٹ نظام کو موثر بنانے ٗریلویز کارگو کو ٹرین کا اجراء ٗ تجارتی روٹس پر سیکننگ مشین میں اضافہ اورچیکنگ کے طریقہ کار کو سہل بنانے پر زوردیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز پاکستان لینڈ پورٹ اتھارٹی کے وفد سے سرحد چیمبر میں ملاقات کے دوران کیا۔پاکستان لینڈ پورٹ اتھارٹی کے وفد میں سابق ممبر ایف بی آر انٹرگریٹیڈ بارڈرز مینجمنٹ اینڈ ٹریڈ فیسیلی ٹیشن کے ماہر سید تنویر احمد ٗ ایچ آر اسپیشلسٹ / ریسرچ اینڈ ڈیٹا تجزیہ نگار ٗ ایشین ڈویلپمنٹ بنک کرنل(ر) محمد عرفان و دیگر شامل تھے جبکہ سرحد چیمبر کے سینئر نائب صدر محمد عمران مہمند ٗ سابق صدر فیض محمد فیضی ٗ سابق سینئر نائب صدر شاہد حسین ٗ پاک افغان جائنٹ چیمبر کے نائب صدر ضیاء الحق سرحدی ٗ سرحد چیمبر کی سٹینڈنگ کمیٹی برائے لینڈ روٹ کے چیئرمین امتیاز علی ٗ امپورٹرز اور ایکسپورٹرز بھی موجود تھے۔ پاکستان لینڈ پورٹ اتھارٹی کے وفد نے سرحد چیمبر کے ممبران کو مذکورہ اتھارٹی کی افادیت و اغراض و مقاصد کے بارے میں تفصیلاً آگاہ کیا اور کہا کہ پاکستان لینڈ پورٹ اتھارٹی کے قیام کے حوالے سے حتمی ایکٹ کا مسودہ تیار کرلیاگیا جو کہ ممکن ہے کہ پارلیمنٹ کی منظوری کے بعد فروری کے وسط تک نافذالعمل کرکے اتھارٹی اپنا باضابطہ کام شروع کردیگی۔ وفد کا کہنا تھا کہ اتھارٹی تجارت میں آسانیاں پیدا کرنے سمیت تاجروں کو سہولیات فراہم کرنے میں اہم کردار اداکرے گی اس ضمن میں طورخم ٗ غلام خان تجارتی روٹس سمیت چمن میں انفراسٹرکچر کی بہتری اور سہولیات کے فراہمی کے لئے ایک خطیر رقم خرچ کی جارہی ہے۔ وفد کے سربراہ نے بارڈرز مینجمنٹ کے نظام کو مربوط و بہتر بنانے کے لئے پبلک پرائیویٹ پارٹنر اہم کردار ادا کرسکتی ہے اور بزنس کمیونٹی کی اونر شپ کے ذریعے نظام کی بہتری سے مسائل بروقت وفوری حل کرنے میں مدد ملے گی۔ سرحد چیمبر کے صدر حسنین خورشید احمد نے کہاکہ ملک بھر کے مختلف تجارتی راہداری پر جدید نظام کی تنصیب خوش آئند اقدام ہے تاکہ نئے / جدید نظام بارڈرز پر سہولیات کے فقدان کی وجہ سے اپنی افادیت کھو رہے ہیں۔ اس ضمن میں حکومت سنجیدہ 

اقدامات اٹھا کر سہولیات کی فراہمی کوہر سطح پر یقینی بنایا جائے تاکہ تاجروں کی مشکلات کا ازالہ کیا جائے اور تجارت کے عمل میں بھی تیزی آسکے۔ انہوں نے اس بات پرزوردیا کہ اضا خیل ڈرائی پورٹ کے باضابط افتتاح / شروع ہونے کے باوجود سہولیات کی عدم فراہمی سے ڈرائی پورٹ پر تاجروں کو بے شمار مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے حکومت اس حوالے سے بھی سنجیدہ اقدامات اٹھا کر اضا خیل ڈرائی پورٹ کو مکمل طورپر فعال بنایا جائے۔ انہوں نے اس موقع پر پاکستان ریلویز کے ذریعے کارگو ٹرین کی بحالی کابھی مطالبہ کیا جس سے نہ صرف کراچی کی بندرگاہ پر تاجروں کے درپیش مسائل کوحل کیا جاسکے گابلکہ پاکستان ریلویز کے لئے خطیر ریونیو بھی پیدا کرنے کا بڑا ذریعہ فراہم کرے گا۔ سرحد چیمبر کے صدر حسنین خورشید احمد نے پاک افغان باہمی تجارت اور وسطی ایشیاء کی ریاستوں کے ساتھ تجارت کوبڑھانے کیلئے درپیش رکاوٹوں اور مسائل کوحکومتی سطح پر سنجیدہ اقدامات اٹھا کر حل کرنے پر بھی زور دیا ہے۔اس موقع پر سرحد چیمبر کے سابق صدر فیض محمد فیضی ٗ سینئر نائب صدر عمران خان مہمند ٗ پاک افغان جائنٹ چیمبر کے نائب صدر ضیاء الحق سرحدی ٗ امتیاز علی اور دیگر نے بھی خطاب کیا اور پاکستان لینڈ پورٹ اتھارٹی کے قیام کے حکومتی اقدام کو کافی سراہا اور مطالبہ کیا کہ حکومت بارڈرز کے نظام میں بہتری لانے ٗ تجارت میں آسانیاں پیدا کرنے سمیت باہمی تجارت کے فروغ کیلئے بھرپور اقدامات اٹھائیں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -