پاکستان کرکٹ کی ”نرسری“کیخلاف سازش،انڈر 16کے ٹرائل مذاق بن گئے

  پاکستان کرکٹ کی ”نرسری“کیخلاف سازش،انڈر 16کے ٹرائل مذاق بن گئے

  

         لاہور(افضل افتخار) پاکستان کرکٹ بورڈ میں سفارشی کلچر اور اقرباء پروری نے ادارے کی ساکھ داؤ پر لگا دی۔ انڈر 16 ٹیم کے کھلاڑیوں کے لاہور میں ہونے والے ٹرائلز میں میرٹ اور ٹیلنٹ کی دھجیاں اڑا دی گئیں تفصیلات کے مطابق انڈر 16ٹیم کے کھلاڑیوں کے چناؤ کے لئے ہونے والے ٹرائلز میں سفارشی مافیا نے چیئرمین پی سی بی رمیز راجہ کی شفاف پالیسیوں پر سوالیہ نشان کھڑے کر دیئے کیونکہ لاہور کے مختلف علاقوں میں انڈر 16ٹیم کے کھلاڑیوں کے چناؤ کے لئے آنے والے ینگسٹرز کو اس وقت مایوسی کا سامنا کرنا پڑا جب رائلز کے لئے بلائے گئے بچوں کے ساتھ ہتک آمیز رویے، گھنٹوں انتظار اور ٹرائلز لینے والے آفیشلز کے ترش رویوں اور لہجوں نے نوجوان بچوں کو پریشان کر دیا۔ ذرائع کے مطابق انڈر16 کے لئے ٹرائلز میں محنتی،قابل اور میرٹ پرآنے والے بچوں کی بجائے سفارشی بچوں کو ”بھرپور“ موقع دینے کی پہلے ہی منصوبہ بندی کر لی گئی تھی۔ اس لئے دوسرے بچوں کو چار چار گھنٹے انتظار کرا کر اور جھڑکیاں دے کر نہ صرف مایوس کیا بلکہ بددل کرکے ان کی پرفارمنس کو بھونڈے انداز میں شدید متاثر کیا گیا ٹرائلزمیں ناانصافی اور سفارشی ماحول کو دیکھ کر کئی بچے آبدیدہ نظر آئے، بلکہ اپنے بچوں کے ساتھ اس ناروا سلوک پر کئی والدین بھی مایوس اور غصے میں نظر آئے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ پی سی بی حکام انڈر 16کے لئے ٹرائلز کی ذمے دار انتظامیہ کو کٹہرے میں لائے اسی سٹیج سے ہی مستقبل کے کھلاڑی تیار کرنے کا موقع ہوتا ہے مگر نااندیش سلیکٹرز نے سفارش کے آگے میرٹ اور محنت کا گلا دبا دیا۔

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -