ایف بی آر کے فیصلوں سے کاروبار ٹھپ ہونے کا اندیشہ، ملک نصیر احمد

ایف بی آر کے فیصلوں سے کاروبار ٹھپ ہونے کا اندیشہ، ملک نصیر احمد

  

لاہور(انٹرویو:میاں شفاق انجم، تصاویر: ایوب بشیر) ایف بی آر کے فیصلوں سے کاروبار ٹھپ ہونے کا اندیشہ ہے،ڈی ایچ اے کی کمیونٹی نے میاں طلعت احمد کو بڑی عزت دی ہے،،ڈی ایچ اے کی برادری کو عزت دلانے اور ایسوسی ایشن کو اس کا حقیقی مقام دلانے کیلئے کردار ادا کریں،پورے پینل کی کامیابی کے مثبت اثرات مرتب ہوں گے،جیتنے والوں کے پاس کام نہ کرنے کا کوئی جواز نہیں رہے گا،الخدمت گروپ کا کلین سویپ میاں طلعت احمد کی سابقہ خدمات کا اعتراف ہے،ان خیالات کا اظہار ڈی ایچ اے لاہور،ملتان،کراچی،بہاولپور کی نامور شخصیت این زیڈ مارکیٹنگ کے چیف ایگزیکٹو ملک نصیر احمد نے روزنامہ پاکستان سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا،ملک نصیر احمد نے ایف بی آر کی طرف سے یکم جنوری 2022ء سے رجسٹرڈ نہ ہونیو الوں کی ٹرانسفر روکنے کی ڈیڈ لائن خطرناک ہے،خوفناک نتائج برآمد ہو سکتے ہیں کاروبار ٹھپ ہو سکتا ہے،ٹرانسفر روکنے کا مطلب دفاتر بند کرایا جائے،ملک نصیر احمد نے کہا کہ ایف بی آر کے ریٹس میں 200سے700فیصد اضافے کے اعلان سے مارکیٹ میں بے یقینی کی فضا ہے،خوف کے سائے میں ایف بی آر کی طرف سے سیلز پرچیز کا ریکارڈ رکھنے کی لازمی شرط کے خوف سے کلائنٹ مارکیٹ سے غائب ہو گیا ہے،،وزیر خزانہ کو مداخلت کرنا ہو گی،رئیل اسٹیٹ سیکٹر اور ہاؤسنگ سیکٹر سب سے زیادہ ریونیو دینے والے شعبے میں ایف بی آر کے ریٹس میں اضافہ اور یکم جنوری سے ڈیلرز کی ٹرانسفر روکنے کی دھمکی رئیل اسٹیٹ سیکٹر کے خلاف نہیں ملکی معیشت اور حکومت کے خلاف سازش ہے، ڈی ایچ اے کے نو منتخب صدر میاں طلعت احمد کو میدان میں آنا پڑے گا،منظم جدوجہد کرنا پڑے گی،ایسوسی ایشن کو اس کی اصلی حالت میں بحال اور کمیونٹی کے وقار میں اضافہ کے لیے کردار ادا کرنا ہو گا۔

ملک نصیر احمد

مزید :

صفحہ آخر -