وزیر اعظم 29دسمبر کو قومی رحمت العالمین اتھارٹی کانفرنس کی صدارت کرینگے

   وزیر اعظم 29دسمبر کو قومی رحمت العالمین اتھارٹی کانفرنس کی صدارت کرینگے

  

  اسلام آ باد (آئی این پی) وزیر اعظم عمران خان 29 دسمبر کو قومی رحمت العالمین اتھارٹی کانفرنس کی صدارت کریں گے تاکہ عالمی سطح کے ممتاز ترین مسلم اسکالرز کے ساتھ بیٹھ کر ان مسائل کا حل تلاش کیا جا سکے جو آج ہمارے معاشرے کو در پیش ہیں۔ اس کانفرنس کا مقصد معاشرے کے اخلاقیاتی اور اخلاقی انحطاط کے اسباب کا جائزہ لینا ہے جو ساختی یا نظریاتی وجوہات کی بنا پر ہو سکتے ہیں۔ اس کانفرنس میں بالعموم مسلم دنیا  اور بالخصوص پاکستان کا ایک طولانی تجزیہ کیا جائے گا تاکہ یہ دیکھا جا سکے کہ ہم کس طرح اس نہج پر پہنچ گئے جہاں ہمارے معاشرے کے بہت سے طبقے بری طرح تباہ ہو چکے ہیں اور انکی تعمیر نو کی ضرورت ہے۔ کانفرنس کا نفسِ موضوع یہ ہے کہ مسلم دنیا کا روحانی اور فکری بحران اس کے عسکری اور اقتصادی چیلنجوں سے پہلے ہے اس لیے عسکری اور اقتصادی چیلنجز پر اسی صورت قابو پایا جا سکتا ہے جب ذہن کی نفسیاتی استعمار پر قابو پایا جائے۔ یہ کانفرنس مسلم دنیا کی طاقت ور اشرافیہ اور فکری اشرافیہ کے درمیان جاری بات چیت کے سلسلے کا نتیجہ ہے۔ جیسے جیسے دنیا کثیر القطبی ہوئی ہے اور انسانی فطرت، قانون اور حکمرانی سے لے کر ماحولیات تک ہر چیز پر متنوع نظریات کے ساتھ، تمام تہذیبوں کو معاشرے کو درپیش اجتماعی چیلنجوں کے حل کے لیے اپنا حصہ ادا کرنا چاہیے۔ ان اہم امور پر اپنے خیالات پیش کرنے اور وزیر اعظم سے بات چیت کرنے کے لیے کانفرنس میں شرکت کرنے والے نامور علما میں ڈاکٹر سید حسین نصر، ڈاکٹر ٹموتھی سرما، شیخ حمزہ یوسف، شیخ عبداللہ بن بیاح، ڈاکٹر عبدالرحمن،  عثمان بکر، ڈاکٹر چندر مظفر اور ڈاکٹر ریسیپ سنٹرک شامل ہیں۔

 وزیر اعظم

مزید :

صفحہ اول -