پی ایچ اے نے منصوبے مکمل ہونے کا باوجود کروڑوں روپے دبا لئے، متا ثرہ فرموں نے وزیر اعلیٰ کو درخواست دیدی

پی ایچ اے نے منصوبے مکمل ہونے کا باوجود کروڑوں روپے دبا لئے، متا ثرہ فرموں نے ...

لاہور(شہبازاکمل جندران//انویسٹی گیشن سیل ) پی ایچ اے نے لاہور میں وزیر اعلیٰ کے سپورٹس اور پارکوں کے منصوبے مکمل ہونے کے باوجود 20سے زائد فرموں کے کروڑوں روپے دبا لیے ہیں۔ اور ادائیگی کے لیے اصرار کرنے والی فرموں کو بلیک لسٹ کرنے اور ان کی تجدید کا عمل روکنے کا سلسلہ بھی شروع کردیا گیا ہے۔ متاثرہ فرموں نے وزیراعلیٰ سے رجوع کرلیا ہے۔ معلوم ہوا ہے کہ پارکس اینڈ ھارٹیکلچر اتھارٹی لاہور نے شہر میں وزیرا علیٰ پنجاب کے سپورٹس و پارکس پروگرام کے تحت مختلف علاقوں میں پارک بنانے ،پودے لگانے اور پارکوں کی تزئین و آرائش کرنے کے علاوہ سٹیڈیم بنانے کے منصوبے شروع کئے اور اس سلسلے میں متعدد رجسٹرڈ فرموں اور تعمیراتی کمپنیوں کو ٹھیکے الاٹ کیے لیکن ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ مذکورہ منصوبے کے تحت کام مکمل ہونے کے باوجود اتھارٹی نے 20سے زائد فرموں اور کمپنیوں کی کروڑوں روپے کی ادائیگی دانستا ً روک رکھی ہے۔ ان میں ایم جے کنسٹرکشن کمپنی کے 72لاکھ روپے ۔محمد اشفاق ٹھیکیدار کے 15لاکھ روپے ۔ چوہدر ی شفیع اینڈکو کے ایک کروڑ 29لاکھ روپے۔چوہدری منیب اینڈکوکے20لاکھ روپے۔الاسد ٹریڈرز کے 12لاکھ روپے۔ ریاض اینڈکو کے 15لاکھ روپے۔ چوہدری عثمان کنسٹرکشن سروسز کے 23لاکھ روپے ۔ آئی ایم کارپوریشن کے 10لاکھ روپے۔ کریم نرسری کے 10لاکھ روپے۔ محمد ریاض ٹھیکیدار کے 8لاکھ روپے۔ کمبوہ برادرز کے 6لاکھ روپے۔ارشد محمود کے 5لاکھ روپے۔ خوشی محمد اینڈ سنز کے 2لاکھ روپے۔ سروان بلڈرز کے 9لاکھ روپے۔ شہزاد اینڈکو کے ایک لاکھ 40ہزار روپے۔ نعمان لیئق کے 30لاکھ روپے ۔ ایچ کے بی کے ڈیڑھ لاکھ روپے۔ شفیق اینڈ براداز کے 10لاکھ روپے ۔ خالق کنسٹرکشن کمپنی کے 15لاکھ روپے اور شہباز برادز کے 10لاکھ روپے واجب الاد ا ہیں۔ متاثرہ فرموں نے وزیراعلیٰ سے رجوع کرلیا ہے۔ وزیر اعلیٰ کو دی جانے والی درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ ڈائریکٹر جنرل پی ایچ اے کیپٹن (ر) محمد محمود دانستا ً ادائیگیاں نہیں کررہے جس کے باعث ٹھیکیداروں کے گھروں کے چولھے ٹھنڈے ہونے لگے ہیں اور وہ خود کشی جیسے قدم اٹھانے پر غور کرنے لگے ہیں۔درخواست میں لکھا گیا ہے کہ کسی بھی ٹھیکیدار نے خود کشی جیسا قدم اٹھایاتو ایف آئی آر ڈی جی پی ایچ اے کیپٹن (ر) محمد محمود کے خلاف درج کروائی جائیگی۔ اس سلسلے میں موقف جاننے کے لیے ڈائریکٹر جنرل پی ایچ اے لاہور کیپٹن (ر) محمد محمود سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے موقف نہ دیا ۔البتہ اتھارٹی کے ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل راجہ خرم شہزاد کا کہناتھا کہ وہ معاملہ ان کے نوٹس میں نہیں ہے۔ جن فرموں کو ادائیگی کے متعلق شکایا ت ہیں ۔ وہ انہیں بتائیں ۔ وہ مسئلے کے حل کے لیے کوشش کرینگے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1