نگرانسیٹ اپ سے پہلے پنجاب پولیس کے موجودہ قانون میں ردو بدل کی تیاریاں

نگرانسیٹ اپ سے پہلے پنجاب پولیس کے موجودہ قانون میں ردو بدل کی تیاریاں

لاہور (زاہد علی خان سے) نگران سیٹ اپ سے چند روز قبل پنجاب پولیس کے موجودہ قانون میں ایک بار پھر ردوبدل کرنے کی تیاریاں شروع کردی گئی ہیں اور موجودہ سیٹ اپ تبدیل کیا جاسکتا ہے اور یہ سب کچھ آئی جی کے ایک سرکلر کے ذریعے کیا جارہا ہے۔ باخبر ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ آپریشن اور انویسٹی گیشن ونگ میں تبدیلیاں کی جارہی ہیں اور ایک بار پھر زیادہ سے زیادہ پولیس افسروں کو ایڈجسٹ کرنے کے لئے یہ سب کیا جارہا ہے۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ آپریشن ونگ کے اختیارات مزید کم کردئیے جائیں گے اور انویسٹی گیشن میں مزید افسران کا اضافہ کیا جائے گا۔ بتایا گیا ہے کہ ایس ایچ او اور ڈی ایس پی کو ایک بار پھر امن وامان کی مکمل ذمہ داری سونپی جارہی ہے دونوں انویسٹی گیشن کے حوالے سے تمام کام کی ذمے داریوں سے بری الزمہ کردئیے جائیں گے اور ےہ افسرا علاقے میں امن وامان اور دیگر معاملات کے ذمہ دار ہوں گے بلکہ ڈی ایس پی آپرےشن کی جگہ ڈی ایس پی انویسٹی گیشن تعینات ہوگا۔ اب ایس ایچ او بھی کسی مقدمہ کے چالان پر دستخط کا ذمہ دار نہ ہوگا۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ نئے سیٹ اپ کے تحت ایس ایچ او اور ایس پی سرکلر ڈی ایس پی، ایس پی آپریشن کے ماتحت کام کریں گے اور ایس پی انویسٹی گیشن ان کو طلب نہیں کرے گا۔ یہ افسران براہ راست ایس ایس پی اور ڈی آئی جی آپریشن کو جواب دہ ہوں گے۔ مزید پتہ چلا ہے کہ اس نظام میں تبدیلی کا مقصد جرائم کی موجودہ صورتحال کے کیا جارہا ہے تاکہ پولیس افسران اپنی توجہ ایک ہی کام پر رکھ سکیں اور جرائم کے خلاف بھرپور کارروائی ہوسکے۔ بتایا گیا ہے کہ اس حوالے سے کاغذی کارروائیاں کی جارہی ہیں۔

مزید : صفحہ اول