ڈالر خرید کر غیر ملکی کرنسی اکاوٗنٹ میں جمع کرانا غیر قانونی ہے : سٹیٹ بینک

ڈالر خرید کر غیر ملکی کرنسی اکاوٗنٹ میں جمع کرانا غیر قانونی ہے : سٹیٹ بینک
ڈالر خرید کر غیر ملکی کرنسی اکاوٗنٹ میں جمع کرانا غیر قانونی ہے : سٹیٹ بینک

  

 کراچی( مانیٹرنگ ڈیسک)سٹیٹ بینک نے روپے کی قدر میں استحکام کیلئے ریسکیو آپریشن کے تحت بینکوں کو خاص ہدایات جاری کردی ہیں جن میں واضح کیا گیا ہے کہ فارن کرنسی اکاو¿نٹ کھولنے کی مجاز برانچوں میں قوانین پر عمل درآمد کو یقینی بنایا جائے،اوپن مارکیٹ سے ڈالر خرید کر فارن کرنسی اکاو¿نٹس میں جمع کرنا غیر قانونی ہے۔۔ ڈالر کے گذشتہ دنوں تاریخ میں پہلی بار سو روپے پر پہنچنے کے بعد سے سٹیٹ بینک اور وزارت خزانہ ڈالر پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔سٹیٹ بینک نے جہاں زرمبادلہ کا کاروبار کرنے والی ایکسچینج کمپنیوں پر نئی پابندیاں لگائیں وہیں اب بینکوں کو بھی خاص احکامات جاری کردیئے گئے ہیں۔سٹیٹ بینک نے بدھ کو جاری کردہ سرکلر میں بینکوں کو ہدایت کی ہے کہ فارن کرنسی اکاو¿نٹ کھولنے کی مجاز برانچوں سے قوانین پر عمل درآمد کو یقینی بنایا جائے۔اوپن مارکیٹ سے ڈالر خرید کر فارن کرنسی اکاو¿نٹس میں جمع کرنا غیر قانونی ہے۔ذاتی فارن کرنسی اکاو¿نٹس میں تجارتی اور کاروباری بنیادوں پر ڈالر کا لین دین نہیں کیا جاسکتا۔ایک اکاو¿نٹ میں کسی ایک دن میں اگر دس ہزار ڈالر کی ٹرانزیکشن ہوتو اس کی رسید لازمی ریکارڈ میں رکھی جائے۔

مزید : بزنس