میک اپ کی شوقین خواتین کے لیے انتہائی ضروری تحقیق

میک اپ کی شوقین خواتین کے لیے انتہائی ضروری تحقیق
میک اپ کی شوقین خواتین کے لیے انتہائی ضروری تحقیق

  

نیویارک(نیوزڈیسک)میک اپ کے دوران خواتین کو ایک عادت ہوتی ہے کہ ان کی آنکھیں بہت خوبصورت نظر آئیں اور اس مقصد کے لئے وہ مصنوعی پلکوں کا استعمال کرتے ہیں لیکن حال ہی میں ہونے والی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ ان کا استعمال انسانی آنکھوں کے لئے انتہائی خطرناک ہے اور ان کے استعمال سے آنکھیں آلودہ ہونے کے ساتھ نظر بھی خراب ہوسکتی ہے۔

انسانی جسم کے لیے زہر قاتل وہ چارغذائیں جو آپ اکثر استعمال کرتے ہیں ،فوراً چھٹکاراپائیں

ماہرین کا کہنا ہے کہ جب مصنوعی پلکوں کا استعمال کیا جاتا ہے تو اس سے آنکھوں پر پریشر پڑتا ہے جبکہ اس کے ساتھ مٹی بھی ان پر زیادہ اکٹھی ہوتی ہے جس سے وہ آلودہ ہونے کی وجہ سے سرخ ہونے کے ساتھ کمزور ہوجاتی ہیں۔ان تمام عوامل کی موجودگی میں آنکھیں غیر محفوظ ہوجاتی ہیں۔جارجیا انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی ،اٹلانٹا میں پی ایچ ڈی مکمل کرنے والے تحقیق کار گیلیمورو ایماڈار کا کہنا ہے کہ یہ مصنوعی پلکیں دیکھنے میں تو بہت اچھی لگتی ہیں لیکن اصل میں یہ بہت خطرناک ہیں۔اپنی تحقیق میں اس نے 22میمیلز کی آنکھوں کا مطالعہ کیا اور یہ نتیجہ سامنے آیا کہ تمام مخلوقات میں پلکوں کی لمبائی آنکھوں کی چوڑائی کے ساتھ متناسب ہے یعنی پلکوں کی لمبائی آنکھ کی چوڑائی سے ایک تہائی کم ہوتی ہیں۔اس کا کہنا ہے قدرت نے ہماری تمام اشیاءکو ایک خاص تناسب سے بنایا ہے اور اگر اس میں خرابی پیدا کی جائے تو مسائل پیدا ہوتے ہیں۔اگر مصنوعی پلکوں کا استعمال کیا جائے تو آنکھوں پر دباﺅ بڑھنے کے ساتھ ان کے خشک ہوجانے کا خطرہ بھی موجود رہتا ہے۔یہ تحقیق Journal of the Royal Society Interfaceمیں شائع ہوچکی ہے۔

ماضی اور آج کل کئی ہالی ووڈ کی مشہور ماڈلز اور خواتین مصنوعی پلکوں کا استعمال کرتی ہیں جو کہ ایک خطرناک عمل ہے۔

مزید : تعلیم و صحت