وائی ڈی اے کا اپنے خلاف ریلی نکالنے پر سینئر ڈاکٹروں پر دھاوا

وائی ڈی اے کا اپنے خلاف ریلی نکالنے پر سینئر ڈاکٹروں پر دھاوا

لاہور ( جنرل رپورٹر) میو ہسپتال میں وائے ڈی اے کی مختلف معاملات میں بے جا مداخلت اور سینئر اساتذہ کی توہین نامنظور کے عنوان سے ایک احتجاجی ریلی منعقد کی گئی جس کے بعد وائے ڈی اے کی جانب سے پروفیسر طلعت سیال کے آفس پر حملہ کے بعد میو ہسپتال وائے ڈی اے اور میڈیکل یونٹ بچہ وارڈ کے ڈاکٹرز کی لڑائی شدت اختیار کر گئی جس پر سینئر رجسٹرار ، اسسٹنٹ پروفیسرز اور ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے درمیان ہاتھا پائی ہوگئی تفصیلات کے مطابق چند روز قبل میڈیکل یونٹ بچہ وارڈ کے سینئر رجسٹرار ڈاکٹر یاسر باجوہ پر وائے ڈی اے کے ڈاکٹرز کی جانب سے تشدد کیا گیا جس پر گزشتہ روز ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کی بے جا مداخلت اور اساتذہ کی توہین نامنظور کے عنوان سے سینئر پروفیسرز ، ڈاکٹرز ، نرسز اور پیرامیڈکس کی جانب سے ریلی منعقد کی گئی یہ ریلی بچہ وارڈ سے ایم ایس آفس سے ہوتے ہوئے اپنے یونٹ پر ختم ہوگئی جس پر وائے ڈی اے نے انتقامی طور پر ریلی نکالنے والے ڈاکٹرز کے دفاتر پر دھاوا بول دیا اور ان سے دھکم پیل ہاتھاپائی اور بدتمیزی کی اور غلیظ گالیاں دیں ڈاکٹر یاسر باجوہ کے مطابق پرامن ریلی نکالی گئی لیکن وائے ڈی اے کے رہنماؤں تجمل بٹ ، ڈاکٹر انعام اللہ برکی کا اپنے ساتھیوں سمیت پروفیسر ڈاکٹرز کے دفاتر پر دھاوا ، بدتمیزی غلیظ گالیاں ، اور ان سے ہاتھا پائی انتہائی قابل مذمت ہے اس حوالے سے ایم ایس میو ہسپتال امجد شہزادنے کہاکہ میں خود چل کر پروفیسر ڈاکٹر طلعت سیال کے آفس میں گیا لیکن وہ جاچکی تھیں یہ وائے ڈی اے کی آپس کی لڑائی ہے لیکن ہسپتال انتظامیہ اس مسئلہ کو حل کرنے میں اپنا کردار ادا کرے گی وائے ڈی اے کے ترجمان ڈاکٹر عامر بندیشہ کا کہنا ہے ڈاکٹر یاسر باجوہ وائے ڈی اے تنظیم کو بدنام کررہے ہیں اگر ان کی کسی ڈاکٹر سے لڑائی ہے تو اس مسئلہ کو خود حل کریں انہوں نے کہاکہ پی ایم اے بھی نوجوان ڈاکٹرز کو آپس میں لڑا رہی ہے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1