پیدائش کے اگلے ہی دن اغواء ہو جانے والی بچی کو 17 سال بعد بچھڑے ہوئے والدین مل گئے،یہ کیسے ممکن ہو ا ؟انتہائی دلچسپ کہانی پڑھیے

پیدائش کے اگلے ہی دن اغواء ہو جانے والی بچی کو 17 سال بعد بچھڑے ہوئے والدین مل ...
پیدائش کے اگلے ہی دن اغواء ہو جانے والی بچی کو 17 سال بعد بچھڑے ہوئے والدین مل گئے،یہ کیسے ممکن ہو ا ؟انتہائی دلچسپ کہانی پڑھیے

  

جوہانسبرگ (نیوز ڈیسک) والدین سے بچھڑ جانے والے بچوں کا واپس مل جانا کسی معجزے سے کم نہیں ہے لیکن 17سال گزرجانے کے بعد کسی بچے کا واپس ملنا تو نہایت حیرت انگیز بات ہے۔ جنوبی افریقہ کے شہر جوہانسبرگ میں 17 سال پہلے والدہ کی گود سے چرالی جانے والی بچی ناقابل یقین طریقے سے اب انہی مل گئی ہے اور ہر سننے والا اس واقعے کو سن کر حیران ہورہا ہے۔ زیفنی نرس نامی لڑکی کے سکول میں موجود ایک دوسری طالبہ کے ساتھ غیر معمولی مشابہت کی وجہ سے اس لڑکی کے والدین نے اسے اپنے گھر چائے پر مدعو کیا۔

نرم دل خاتو ن نے 'آن لائن'محبت پر 14 کروڑ روپے لٹا دیے لیکن پھر۔۔۔

زیفنی کی اپنی تین دیگر بچیوں کے ساتھ حیرت انگیز مشابہت کو دیکھ کر والدین کو شک گزرا کہ یہ ان کی کھوئی ہوئی بچی ہے اور انہوں نے فوری طور پر پولیس کو بلوالیا۔ جب زیفنی کا ڈی این اے ٹیسٹ کروایا گیا تو یہ دلچسپ بات سامنے آئی کہ وہ ان کی کھوئی ہوئی بیٹی ہے جسے سترہ سال قبل اس کی سوتی ہوئی ماں کی گود سے چرا لیا گیا تھا۔ بیٹی کے ملنے پر والدین کی خوشی کی انتہا نہیں رہی ہے۔ زیفنی کو چرانے کے الزام میں ایک 50 سالہ خاتون کو حراست میں لیا جاچکا ہے اور اس کے خلاف تفتیش کی جارہی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس