لاہور ہائی کورٹ بار کی نومنتخب ایسوسی ایشن نے بھی فوجی عدالتوں کے قیام کی مخالفت کردی ،نئے صدر کا جدوجہد جاری رکھنے کااعلان

لاہور ہائی کورٹ بار کی نومنتخب ایسوسی ایشن نے بھی فوجی عدالتوں کے قیام کی ...
لاہور ہائی کورٹ بار کی نومنتخب ایسوسی ایشن نے بھی فوجی عدالتوں کے قیام کی مخالفت کردی ،نئے صدر کا جدوجہد جاری رکھنے کااعلان

  


لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ بار کی نومنتخب ایسوسی ایشن نے بھی فوجی عدالتوں کے قیام کی مخالفت کرتے ہوئے ان کے خلاف جدوجہد جاری رکھنے کا اعلان کردیا ۔نومنتخب صدر پیر مسعود چشتی نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ فوجی عدالتیں متوازی نظام ہے جس کی آئین اجازت نہیں دیتا ،ہم فوجی عدالتوں کی مخالفت کرتے رہیں گے ،لاہور ہائی کورٹ بار نے فوجی عدالتوں کے خلاف سپریم کورٹ میں جو آئینی درخواست دائر کررکھی ہے اس کی بھرپور پیروی کریں گے ،انہوں نے مزید کہا کہ میڈیا کی آزادی پر کوئی قدغن برداشت نہیں کی جائے گی ۔میڈیا کو دبانے کی کوئی بھی کوشش کی گئی تو بار صحافیوں کے ساتھ کھڑی ہوگی ۔انہوں نے مزید کہا کہ بار اور بنچ ایک ہی گاڑی کے دوپہیے ہیں ہم مل کر چلیں گے اور آئین کی بالا دستی کو یقینی بنائیںگے ۔انہوں نے کہا کہ وکلاءاپنی پیشہ ورانہ صلاحیتیوں کو بہتر بنانے پر توجہ دیں ،ہم ان کے مسائل حل کریں گے اور سب کو ساتھ لے کر چلیں گے ۔ہائی کورٹ بار کے نومنتخب سیکرٹری محمد احمد قیوم نے کہا کہ نوجوان وکلاءکے مسائل حل کرنے کو ترجیح دی جائے گی ،وکلاءبرادری میں بڑے بڑے مگرمچھ 80،80محکموں کی لیگل ایڈوائزریاں لے کر بیٹھے ہوئے ہیں جبکہ قانون کے تحت ایک وکیل دو سے زیادہ محکموں کا لیگل ایڈوائزرنہیں ہوسکتا ۔ہم بڑے مگرمچھوں سے لیگل ایڈوائزریاں واپس لے کر نوجوان وکلاءمیں تقسیم کرنے کے لئے جدوجہد کریں گے ۔اس موقع پر نومنتخب عہدیداروں کے حامیوں نے ان کے حق میں نعرہ بازی کی اور ڈھول کی تھاپ پر بھنگڑے ڈالے۔

مزید : قومی /اہم خبریں


loading...