راولپنڈی سٹیڈیم میں سپائیڈر کیمرا استعمال نہ ہونے کا امکان

راولپنڈی سٹیڈیم میں سپائیڈر کیمرا استعمال نہ ہونے کا امکان

  



راولپنڈی(آئی این پی)راولپنڈی سٹیڈیم میں تماشائیوں اور کھلاڑیوں کی جانوں کے تحفظ کے لئے پاکستان سپر لیگ میچ کے دوران سپائیڈر کیمرا استعمال نہ کئے جانے پر سنجیدگی سے غور کیا جارہا ہے۔ بھاری سپائیڈر کیمرا تاروں کی مدد سے کنٹرول کیا جاتا ہے جو میچ میں گراؤنڈ کے اوپر رہتا ہے لیکن پنڈی میں دھاتی ڈور اسکو نقصان پہنچا رہی ہے،اسی ڈور سے کئی شہریوں کی بھی گردنیں کٹ چکی ہیں۔پی سی بی انتظامیہ، براڈ کاسٹرز، ضلعی انتظامیہ اور پولیس کی میٹنگ کے بعد حتمی فیصلہ آج کیا جائیگا۔ اگر جمعرات کے میچ میں کیمرے کی تنصیب نہ ہوسکی تو پنڈی کے بقیہ میچوں میں بھی اسے استعمال نہیں کیا جائیگا،نئی دہلی میں بھی اسی قسم کی صورتحال کی وجہ سے سپائیڈر کیمرے کے استعمال پر پابندی ہے۔

 پی سی بی ذرائع کا کہنا ہے راولپنڈی میں دفعہ144 نافذ ہے اسکے باوجود منچلے شام ہوتے ہی چھتوں پر چڑھ کرپتنگیں اڑا تے ہیں۔تنصیب کے دوران پتنگ کی ڈور سے تین بار کیمرے کی بھاری تاریں کٹ چکی ہیں جس پر براڈ کاسٹرز نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ یہ میچ کے دوران گر گیا تو اس سے کوئی سانحہ ہوسکتا ہے۔ پولیس کوشش کے باوجود پنڈی سٹیڈیم کے اطراف پتنگ اڑانیوالوں کو روکنے میں ناکام رہے ہیں، دو دن میں تین بار تار کٹنے کے بعد سپائیڈرکیمرے کی تنصیب کاکام بھی روک دیا گیا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ پنڈی سٹیڈیم میں تمام میچوں کے 90 فیصد ٹکٹ فروخت ہوچکے ہیں۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی