محکمہ ٹرانسپورٹ کے غیر قانونی سی این جی سیلنڈرز کے خلاف صوبے بھر میں کریک ڈاؤن

محکمہ ٹرانسپورٹ کے غیر قانونی سی این جی سیلنڈرز کے خلاف صوبے بھر میں کریک ...

  



پشاور(سٹی رپورٹر)خیبر پختونخوا کے سیکرٹری ٹرانسپورٹ ذاکر حسین آفریدی نے کہا ہے کہ ہائی کورٹ کے احکامات اور چیف سیکرٹری کی ہدایات کے مطابق غیر قانونی سی این جی سلینڈرز کیخلاف محکمہ ٹرانسپورٹ خیبر پختونخوا کی صوبے بھر میں کارروائیوں کے دوران سات ہزار تین سو پانچ (7305)گاڑیوں کو جرمانے کئے گئے اور ایک سو سترہ(117) گاڑیوں سے غیر قانونی سی این جی سلینڈرز اتارے گئے۔ تفصیلات کے مطابق محکمہ ٹرانسپورٹ نے پچھلے دو مہینوں کے دوران 384،33 گاڑیوں کو چیک کیا جس میں 7305 سات ہزار تین سو پانچ گاڑیوں کو جرمانے کیے گئے اور 117 گاڑیوں سے غیر قانونی سے این جی سلنڈرز اتارے گئے۔ ان گاڑیوں میں 1092 ذاتی،1501 سکول بچوں کو لے جانے والے گاڑیاں اور 4712 پبلک گاڑیاں شامل ہیں۔ سیکرٹری ٹرانسپورٹ کا کہنا تھا کہ کہ ان تمام ڈرائیور حضرات کو وارننگ دی جاتی ہے کہ وہ غیر قانونی سی این جی سلینڈرز کو جلد از جلد ہٹائیں ورنہ ان کے خلاف قانونی کارروائی کی جائیگی۔ سیکرٹری ٹرانسپورٹ کا کہنا تھا کے چیف سیکرٹری کی ہدایات کے مطابق تمام غیرقانونی سی این جی ورکشاپ کے خلاف ایکشن پلان مرتب کیا گیا ہے جس کے پہلے مرحلے میں آگاہی مہم کے طور پر صوبہ بھر میں عوامی مقامات اور سرکاری دفاتر پر بینرز آویزاں کیے گئے تھے جبکہ پبلک ٹرانسپورٹ میں سٹیکرز بھی چسپاں کیے گئے ہیں اور اس طرح آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی کی منظور شدہ سی این جی ورکشاپس کو بھی بڑھایا جا رہا ہے سیکرٹری ٹرانسپورٹ کا کہنا تھا کہ ڈپٹی کمشنر کی سربراہی میں ٹاسک فورس بھی مرتب کی گئی ہے اور اس طرح دوسرے مرحلے میں تمام غیر قانونی ورکشاپ کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر