امریکہ نے کرونا وائرس کے علاج کیلئے دو ا تیار کر لی

امریکہ نے کرونا وائرس کے علاج کیلئے دو ا تیار کر لی

  



واشنگٹن(اظہر زمان،خصوصی رپورٹ) امریکہ میں کرونا وائرس کے علاج کیلئے ایک دوار تیار کرلی گئی ہے جس کے انسانی تجربات کے نتائج حوصلہ افزاء ثابت ہوئے ہیں۔ COVID-19 کہلانے والے اس وائرس کے علاج کی نئی دوا کا نام ”ریمڈیسی ور“ کو چین کے علاوہ سیاحتی بحری جہاز کے ذریعے امریکہ پہنچنے والے مریضوں پر پہلے ہی استعمال کیا جا چکا ہے۔ امریکہ میں اب تک اس کے ساٹھ کیسز سامنے آئے ہیں جو دو کے سوا وہ افراد ہیں جنہوں نے چین کا سفر کیا تھا۔ صرف دو افراد چین سے آئے مسافروں کے ذریعے بیمار ہوئے ہیں۔ ایک فرد کا معاملہ غیر واضح ہے۔ ان ساٹھ کیسز میں سے سات پہلے ہی صحت یاب ہو چکے ہیں۔ موجودہ کرونا وائرس کو کووڈ۔19 کا نام دیا گیا ہے اور ماضی میں SARS اور MERS کے نام سے وبائی صورت اختیار کرنے والے وائرس بھی کرونا ہی تھے۔ صحت کے عالمی ادارے نے موجودہ کرونا وائرس کیلئے ”ریمڈیسی ور“ نامی دوا کے موثر ہونے کی تصدیق کر دی ہے جو خون میں شامل ہو کر اس وائرس کو سرگرمی سے روک دیتی ہے۔ صدر ٹرمپ نے امریکی عوام کو بتایا ہے کہ امریکہ میں کرونا سے خطرے کی سطح بہت کم ہے تاہم انہوں نے اس کی روک تھام کیلئے حکومتی سرگرمیوں کی نگرانی کرن کی ذمہ داری نائب صدر پنس کو سونپ دی ہے۔ اس دوران وفاقی وزیر صحت ایلیکس ازر نے بتایا ہے کہ اس وقت ملک بھر میں چالیس لیبارٹریز وائرس کے نمونوں کو ٹیسٹ کر رہی ہیں جن کی تعداد آئندہ چوبیس گھنٹوں میں دگنی ہو جائے گی۔

نئی دوا

مزید : صفحہ اول