عمران خان نے کشمیر تحریک کو نئی روح بخشی، بھارت اپنی پوزیشن کھو بیٹھا: سردار عتیق

عمران خان نے کشمیر تحریک کو نئی روح بخشی، بھارت اپنی پوزیشن کھو بیٹھا: سردار ...

  



لاہور(جنرل رپورٹر) آزاد کشمیر کے سابق وزیر اعظم سردار عتیق احمد خان نے کہا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان نے اپنی تقاریر میں کشمیر کا موقف جس طرح دنیا کے سامنے پیش کیا اس سے پہلے کسی پاکستانی لیڈر نے ایسا نہیں کیا۔ان کے موقف کے باعث سیکیورٹی کونسل کے چند ماہ میں کشمیر کے حوالے سے دو اجلاس ہونے کا مقصد دنیا میں ان کی کشمیر کے لیے اٹھنے والی آواز اور کشمیریوں کی حمایت وزیر اعظم عمران خان کی کامیابی ہے۔کشمیر میں بھارتی مظالم کے 204روز مکمل ہو چکے ہیں لیکن وہاں قابض دس لاکھ بھارتی فوج کشمیریوں کی جدوجہد روکنے میں ناکام ہے۔ ٹرمپ کے بھارت دورے کے دوران وہاں شدید احتجاجی مظاہرے جاری ہیں حالانکہ ٹرمپ ساتویں مرتبہ ثالثی کروانے کا اعلان کر چکے ہیں۔ دنیا بھر کے کے لیڈروں نے ایسی صورتحال کے باعث بھارت کے دورے منسوخ کیے اور بھارت جانتا ہے کہ اسے دنیا بھر میں ناکامی کا منہ دیکھنا پڑ رہا ہے اورہر طرف کشمیر کے حق میں آواز اٹھ رہی ہے۔یہ وقت ہے کہ کشمیر کی موجودہ صورتحال پر فوری طور پر ایکشن لیا جائے اور عملی طور پر کام کر کے دکھایا جائے۔ گزشتہ روزروزنامہ ”پاکستان“کو انٹرویو میں سردار عتیق احمد خان نے کہا کہ تحریک نے آزادی کے تحریک کے ساتھ ”کشمیر بنے گا پاکستان“ کی تحریک پر زور دے دیا ہے جبکہ اقوام متحدہ کے اصرار کے باجود بھارت نے ابھی تک علاقے کا سٹیٹس تبدیل نہیں کیا اور نا ہی شملہ معاہدے کی پاسداری کی جا رہی ہے یہی وجہ ہے کہ بھارت میں آسٹریلیا،جاپان کے ساتھ دیگر ممالک کے لیڈروں نے دورے منسوخ کر دئیے ہیں۔اس کے ساتھ یورپی پالیمنٹ میں بھی ہندوستان اپنی ساکھ خراب کر چکا ہے جس کے باعث تمام یورپیین پارلیمنٹ میں ہندوستان کی پوزیشن قبول نہیں کی جارہی۔انہوں نے کہا کہ بھارت میں معاشی بحران پاکستان کی نسبت زیادہ ہے اسی بحران کے باعث اور کشمیر کی موجودہ صورتحال پر وہاں کی گروتھ 2.50فیصد ہے اور پاکستان کی گروتھ3.50فیصدہے۔انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں سید علی گیانی،میر واعظ عمر فاروق،آسیہ اندرابی جیسے لیڈران نظر بند و پابند سلاسل کی صعوبتیں برداشت کر رہے ہیں یہاں تک کے آسیہ اندرابی کے شوہر کو جب بھارتی فوج نے گرفتار کیا اس وقت ان کے بچے کی عمر چھ ماہ تھی جبکہ آج ان کا بیٹا 27 برس کا جوان ہو چکا ہے اور وہ قید ہیں۔پاکستان کے عوام اورفوج نے کشمیر کی آزادی کے لیے بہت کچھ کیا ہے لیکن اب عملی طور پر حکومت کے اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔ جس طرح بھارتی اسمبلی میں حافظ سعید کو عالمی دہشتگرد قرار دیا گیا۔یہاں قومی اسمبلی میں بھی بھارتی ایجنسی آر ایس ایس کو دہشتگردقرار دیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ گلگت،بلتستان کو صوبہ بنانے کے بجائے اسے کشمیر کا حصہ رہنے دیا جائے اور اس کو صوبہ بنانے پر توجہ دینے کے بجائے اس کی حیثیت کو تبدیل نا کیا جائے۔بھارت پاکستان میں جنگ مسلط کرنا چاہتا ہے جو اس کے لیے نقصان کا باعث ہو گا۔

سردار عتیق

مزید : صفحہ اول