جماعت اسلامی کا6مارچ کو مہنگائی کے خلاف مظاہروں کا اعلان

جماعت اسلامی کا6مارچ کو مہنگائی کے خلاف مظاہروں کا اعلان

  



کراچی(سٹاف رپورٹر)جماعت اسلامی سندھ کے امیرمحمد حسین محنتی نے جمعہ 6مارچ کو مہنگائی کے خلاف سندھ بھرمیں احتجاجی مظاہروں کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومتی بلند وبانگ دعووں کے باوجود روزانہ بڑھتی ہوئی مہنگائی نے عام آدمی کو سخت پریشان کردیا ہے۔گذشتہ چندسالوں کے دوران صرف صوبہ سندھ میں 1300سے زیادہ لوگوں نے خودکشی کی ہے جس میں دیگرعوامل کے علاوہ مہنگائی بھی ایک اہم سبب ہے۔ھرشہری ایک لاکھ 58ہزارروپے کا مقروض ہے۔جماعت اسلامی نے 20 فروری سے مہنگائی کے خلاف" مارگئی مہنگائی" کے سلوگن سے سینیٹر سراج الحق کی قیادت میں مہم شروع کر دی ہے۔ جس میں مہنگائی کے خلاف مظاہرے اور حکومت کی عوام دشمن معاشی پالیسیوں سے قوم کو آگاہ کیا جائے گا۔اس حوالے سے 15مارچ کو کندھکوٹ میں مارگئی مہنگائی کانفرنس کاانعقاد اورمرکزی رہنما لیاقت بلوچ خطاب کریں گے،22مارچ کو سندھ بھرمیں مہنگائی کے خلاف ریلیاں،کیمپ کا انعقاد جبکہ 15سے 19مارچ امیرجماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق سندھ کا پانچ روزہ دورہ کریں گے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے حیدرآباد پریس کلب میں پریس کانفرنس کے دوران کیا۔انہوں نے مزید کہا کہ بدانتظامی اورکرپشن کی وجہ سے تیل گیس اورکوئلہ سمیت قدرتی دولت سے مالا مال سندھ کے عوام غربت وافلاس کی عملی تصویر بنے ہوئے ہیں۔تبدیلی کی دعویدار حکومت عوامی مسائل کے حل، مہنگائی کے کنٹرول سمیت ڈلیور کرنے میں ناکام رہی ہے۔ رکارڈ قرضے بے تحاشہ سود اور آئی ایم ایف کی غلامی اختیار کرنے باوجود ملک مزید مقروض اور عام آدمی صاف پانی، صحت تعلیم جیسی بنیادی سہولیات سے بھی محروم ہے۔ مہنگائی اور حکومت کی ناکام معاشی پالیسیوں کی وجہ سے ملک بدحال اور عوام بے حال ہوچکے ہیں۔ مسائل سے نجات اور معاشی ترقی کا واحد حل شریعت کا نظام اور سودی لعنت کا خاتمہ ہے۔اس وقت کراچی سے کشمور پورے سندھ میں امن و امان کی صورتحال خراب، شہر گندگی کا ڈھیر اور کرپشن کا راج ہے۔سب سے زیادہ کرپشن کے مقدمات بھی یہاں کے حکمرانوں کے خلاف درج ہیں۔صوبے کی تعمیر وترقی اورشہروں کی صورتحال کو بھتربنانے کے لیے بلدیاتی اداروں کو مالی وانتظامی اختیارات دیئے جائیں۔ این ایف سی ایوارڈ میں سندھ کو اپنا جائز حق دیا جائے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر