پروٹوکول کے نام پر خزانے کا استعمال، دائر درخواست پر نوٹس جاری

    پروٹوکول کے نام پر خزانے کا استعمال، دائر درخواست پر نوٹس جاری

  



لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس سید مظاہرعلی اکبرنقوی نے پروٹوکول کے نام پرسرکاری خزانے کے بے جا استعمال کے خلاف دائر درخواست پر وفاقی اور پنجاب حکومت کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیاہے،فاضل جج نے دوران سماعت ریمارکس دیئے کہ قائد اعظم کے ٹائم میں جب میٹنگ بلائی گئی تو ممبران کو کہا گیا کہ چائے کافی گھر سے پی کہ آئیں،درخواست گزارلائیرز فاونڈیشن فار جسٹس کی جانب سے اے کے ڈوگر ایڈووکیٹ نے موقف اختیار کیا ہے کہ یہ اہم کیس ہے اور تاریخ میں پہلی دفعہ میں نے دائر کیا ہے،سرکاری خزانے کے بے جا استعمال پر حکم امتناعی ہے لیکن اس پر عمل درآمد نہیں ہو رہا،عدالتی حکم پر قانون کے مطابق عمل درآمد کرنا ضروری ہے،وکیل نے کہا کہ میری زندگی میں پہلی بار جج صاحب نے ہمت کی اور یہ آرڈر کر دیا،عدالت عالیہ کے حکم امتناعی کے باوجود سرکاری خزانے کا بے جا استعمال جاری ہے،اسلام آباد میں ایوان صدر کی تزئین و آرائش کے لئے 23 ملین خرچ کر دیئے گئے،وزیراعظم عمران خان اور وزیر اعلیٰ پنجاب کے پروٹوکول پر کروڑوں روپے خرچ کئے جا رہے ہیں،عدالت عالیہ کے حکم امتناعی پر عمل درآمد کو یقینی بنانے کا حکم دیا جائے۔

پروٹوکول

مزید : صفحہ آخر