پیپر ارولز کی خلا ف ورزی‘ٹھیکیداروں کا ٹینڈرز کا بائیکاٹ

پیپر ارولز کی خلا ف ورزی‘ٹھیکیداروں کا ٹینڈرز کا بائیکاٹ

  



بہاول پور(بیورورپورٹ، ڈسٹرکٹ رپورٹر) چولستان کے علاقے مین تقریباً34 کروڑ روپے پانچ ترقیاتی جن میں سڑکیں،پائپ لائن اور پانی کے کنڈز کی تعمیر شامل ہے کہ ٹینڈرز کال کیے گئے تھے گزشتہ روز جب ٹھیکیدار ٹینڈرز فام لینے کے لیے سی ڈی اے کے آفس (بقیہ نمبر19صفحہ12پر)

میں آئے تو ان ٹھیکیداروں کو ایک بنک اکاؤنٹ جو کہ ایم ڈی چولستان کے نام ہے کی سلپ دی گئی کہ ٹینڈرز فیس اس اکاؤنٹ میں جمع کروائیں جس پر ٹھیکیداروں نے کہا کہ یہ تو پیپرا رولز کی خلاف ورزی ہے آپ ہم سے بنک چالان یا سی ڈی آر بنوانے کے لیے ہم تیار ہے مگر سی ڈی اے کے کلرک نے انکار کر دیا کہ میں ٹینڈرز نوٹس اس وقت تک نہیں دونگا جب تک ایم ڈی کے اکاؤنٹ میں ٹینڈرز فیس جمع نہیں کی جاتی جس پر ٹھیکیداروں نے احتجاج کرتے ہوئے ٹینڈروں کا بائیکاٹ کر دیا ٹھیکیداروں نے ایم ڈی چولستان پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ یہ سب کچھ ایم ڈی رانا سلیم اپنے من پسند ٹھیکیداروں کو نوازنے کے لیے کر رہا ہے اور اس کے لیے ایم ڈی چولستان نے راتوں رات سندھ کے فرموں کو جن میں اے ٹی اے انٹر پرائزر،اے اے رحمان،ایڈونس کمپنی اور ممتاز اینڈ کمپنی شامل ہے کو سی ڈی اے میں رجسٹرڈ کیا تاکہ ان کو کروڑوں روپے کے کام دے سکے جبکہ درجنوں فوسری مرکز ہے جنہوں نے سی ڈی اے رجسٹرڈ ہونے کے لیے کئی مہینوں سے اپلائی کیا ہوا مگر ان کو آج تک رجسٹرڈ نہیں کیا گیا۔ٹھیکیداروں نے کمشنر بہاول پور مطالبہ کیا کہ ٹینڈروں کو منسوخ کرکے دوبارہ پیپرا کے قوانین کے تحت کروایئے جائے تاکہ میرٹ پر ٹینڈرز کروائیں جا سکے ۔

ٹینڈرز

مزید : ملتان صفحہ آخر