ڈائریکٹر اینٹی کرپشن ڈیرہ حمزہ سالک کے والد اینٹی کرپشن کے ہی ملزم نکلے

  ڈائریکٹر اینٹی کرپشن ڈیرہ حمزہ سالک کے والد اینٹی کرپشن کے ہی ملزم نکلے

  



  

ملتان (کو رٹ رپورٹر) حکومت پنجاب کی جانب سے کرپشن کے خاتمے کے دعووں کی کلی کھل گئی۔ڈائریکٹر اینٹی کرپشن ڈیرہ غازی خان حمزہ سالک کے والد پروفیسر ڈاکٹر کامران سالک  اینٹی کرپشن کے ہی ملزم نکلے۔اینٹی کرپشن ملتان میں درج نشتر کرپشن کیس(بقیہ نمبر51صفحہ12پر)

57/18  میں سابق ایم ایس نشتر اسپتال ڈاکٹر عاشق ملک اور سابق پرنسپل نشتر میڈیکل کالج ڈاکٹر کامران سالک پر ادویات کی فروخت میں خرد برد اور غیر قانونی بھرتیوں کے الزامات ہیں۔واضح رہے کہ نشتر ہسپتال  ادویات کی خرد برد کیس میں سابق ایم ایس نشتر اسپتال ڈاکٹر عاشق ملک اور سابق پرنسپل نشتر میڈیکل کالج ڈاکٹر کامران سالک  سمیت دیگر ملزمان کے خلاف اینٹی کرپشن ملتان میں مقدمہ درج کیا گیا تھا۔۔ذرائع کا کہنا ہے کہ پروفیسر ڈاکٹر کامران سالک کے بیٹے جو کہ ڈائریکٹر اینٹی کرپشن ڈیرہ غازی خان تعینات ہیں۔مبینہ طور پر کیس پر اثر انداز ہورہے ہیں۔یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ ڈاکٹر عاشق ملک کے خلاف اینٹی کرپشن ڈیرہ غازی خان میں بھی مقدمہ درج ہے۔اور ملتان اینٹی کرپشن میں درج مقدمہ میں ڈاکٹر عاشق ملک اور ڈاکٹر کامران سالک شریک ملزم ہیں۔اسی کیس میں ڈاکٹر کامران سالک کی ضمانت اینٹی کرپشن عدالت سے منظور ہوئی تاہم اس فیصلے کے خلاف اپیل نہ کی گئی۔

ملزم نکلے

مزید : ملتان صفحہ آخر