فرانسیسی بحری جہاز کی طرف سے پکڑی جانیوالی کشتی پر ایک مرتبہ پھر پاکستان میری ٹائم سیکیورٹی ایجنسی اور اے این ایف کا چھاپہ، اب کیا کچھ ملا؟ اعلان کردیاگیا

فرانسیسی بحری جہاز کی طرف سے پکڑی جانیوالی کشتی پر ایک مرتبہ پھر پاکستان ...
فرانسیسی بحری جہاز کی طرف سے پکڑی جانیوالی کشتی پر ایک مرتبہ پھر پاکستان میری ٹائم سیکیورٹی ایجنسی اور اے این ایف کا چھاپہ، اب کیا کچھ ملا؟ اعلان کردیاگیا

  



کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن)فرانسیسی بحری جہاز کی طرف سے منشیات سمیت پکڑی جانیوالی کشتی کی کڑی نگرانی کے بعد ایک مرتبہ پھرپاکستان میری ٹائم سیکیورٹی ایجنسی نے کامیاب کارروائی کی اور النہیمی نامی کشتی سے 210 کلوگرام چرس برآمد کرلی تاہم عملہ فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا۔

ترجمان کے مطابق گزشتہ سال فرانسیسی بحری جہاز FS COURBET نے آپریشن کرتے ہوئے بلوچستان کے جنوب میں پسنی سے 40 میل دور ایک پاکستانی ماہی گیر کشتی بنام AL-NAHEEMI  کو اپنی حراست میں لیا اور دوران تلاشی   3530 کلوگرام چرس برآمد کی گئی۔ فرانسیسی بحری جہاز نے کشتی اور عملہ چھوڑ دیا تھا تاہم ضبط شدہ منشیات کو طے شدہ طریقے کار کے مطابق سمندر برد کردیا گیا اور اس ماہی گیر کشتی کی اطلاع حکومت پاکستان کو دی گئی تھی۔اس کے بعد پی ایم ایس اے نے مذکورہ کشتی پر گہری نظر رکھی  اور بالآخر خفیہ معلومات  پر 25 فروری 2020ءکو بحیرہ عرب میں اینٹی نارکوٹکس فورس کے ساتھ کامیاب آپریشن کرتے ہوئے اس مشکوک پاکستانی ماہی گیر کشتی کی جانب پیش قدمی کی، پی ایم ایس اے کے جہاز کو اپنی طرف آتا دیکھ کر کشتی کا عملہ اندھیرے کا فائدہ اٹھاتے ہوئے وہاں سے فرار ہوگیا اور پاکستان میری ٹائم سکیورٹی ایجنسی اور اینٹی نارکوٹکس فورس نے کشتی کو اپنی تحویل میں لے لیا اور تلاشی کے دوران اس کشتی سے210 کلو گرام چرس برآمد ہوئی، بین الاقوامی منڈی میں اس منشیات کی مالیت 4کروڑ 20 لاکھ ہے۔ ضبط شدہ منشیات کو مزید قانونی کارروائی کے لئے اینٹی نارکوٹکس فورس کے حوالے کردیا گیا۔

ترجمان نے مزید بتایا کہ پاکستان میری ٹائم سکیورٹی ایجنسی پاکستان کے سمندری حدود میں قانون نافذ کرنے والی واحد ایجنسی ہے جو کسی بھی غیر قانونی سرگرمیوں کا مقابلہ کرنے کے لئے اپنے جہازوں اور ہوائی جہازوں کے ساتھ سمندر میں مستقل طور پر موجودگی برقرار رکھے ہوئے ہے،پاکستان میری ٹائم سکیورٹی ایجنسی چوکس اور کسی بھی غیر قانونی کام کے لئے پاکستانی سمندری حدود کے استعمال کو روکنے کے لئے پرعزم ہےاور سمندر پر قانونی نظام کو نافذ کرنے کی اپنی قومی ذمہ داری نبھاتی رہے گی۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی