جمعیت علماء اسلام( ف ) کے مقامی رہنما کو بیٹے اور شاگرد سمیت قتل کردیا گیا

جمعیت علماء اسلام( ف ) کے مقامی رہنما کو بیٹے اور شاگرد سمیت قتل کردیا گیا
 جمعیت علماء اسلام( ف ) کے مقامی رہنما کو بیٹے اور شاگرد سمیت قتل کردیا گیا

  

اسلام آباد (ویب ڈیسک)  تھانہ بھارہ کہو کی حدود میں  پرنس روڈ پر نامعلوم افراد کی فائرنگ سے جمعیت علماء اسلام( ف ) کے مقامی رہنمااورمسجد صدیق اکبرکے امام مفتی اکرام بیٹے اورشاگرد سمیت جاں بحق ہوگئے۔

پولیس کے مطابق گزشتہ رات  مفتی اکرام اپنے13 سالہ بیٹے اورشاگردکے ساتھ موجود تھے کہ ان پر نامعلوم افراد نے اندھادھند فائرنگ کردی جس سے تینوں جاں بحق ہوگئے،اطلاع ملتے ہی مقامی پولیس فوری جائے وقوعہ پرپہنچ گئی اورتینوں لاشوں کوپوسٹمارٹم کیلیے ہسپتال منتقل کردیا۔

 ایکسپریس کے مطابق ایس پی سٹی عمرخان کا کہناہے واقعہ کی تفتیش جاری ہے جبکہ متعلقہ ایس ایچ اوحبیب الرحمن نے  بتایاکہ واقعہ ٹارگٹ کلنگ معلوم ہوتا ہے جس کی ہر پہلو سے تفتیش کی جارہی ہے، واقعہ پر ڈی آئی جی آپریشنزافضال احمدکوثرنے تحقیقات کیلئے ایس ایس پی انویسٹی گیشن کی سربراہی میں دوٹیمیں تشکیل دیدی ہیں۔

ڈی آئی جی نے ایس ایس پی تفتیشی ونگ کو ہدایت کی ہے کہ تفتیشی ٹیمیں سرزد وقوعہ کے ہر پہلو پر تحقیقات کریں اور رپورٹ 24 گھنٹے کے اندرپیش کریں۔

مزید :

جرم و انصاف -علاقائی -اسلام آباد -