سینیٹ انتخابات میں پارٹی امیدوار کو ووٹ نہ دینے والے ممبران پر۔۔۔۔نیئر حسین بخاری نے بحث کا نیا دروازہ کھول دیا

سینیٹ انتخابات میں پارٹی امیدوار کو ووٹ نہ دینے والے ممبران پر۔۔۔۔نیئر حسین ...
سینیٹ انتخابات میں پارٹی امیدوار کو ووٹ نہ دینے والے ممبران پر۔۔۔۔نیئر حسین بخاری نے بحث کا نیا دروازہ کھول دیا

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) پیپلز پارٹی کےمرکزی سیکرٹری جنرل سید نیئرحسین بخاری نے کہا ہے کہ سینیٹ انتخابات میں پارٹی امیدوار کو ووٹ نہ دینے والے ممبران پر ڈیفیکشن کلاز لاگو نہیں ہوتی،تحریک انصاف(پی ٹی آئی) اوراتحادی ممبران سےرابطے میں ہیں،پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ(پی ڈی ایم) کے متفقہ امیدوار   یوسف رضا گیلانی کی جیت کیلئے پر امید ہیں  ،سید یوسف رضا گیلانی کی  آئین اور  جمہوریت کیلئے خدمات  انہیں  کامیابی سے ہمکنار کرے گی، حکمران جماعت کے  اپنے ممبران حکومتی پالیسیوں سے نالاں ہیں۔

 نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے سابق چیئرمین سینیٹ سید نیئرحسین بخاری کا کہنا تھا کہ حکمرانوں کے عوام دشمن فیصلوں کی وجہ سے وزراء اورحکومتی اراکین اسمبلی  عوام کا سامنا نہیں کر سکتے ۔انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ  سپریم کورٹ کے سامنے بنیادی سوال یہ ہے کہ سینیٹ انتخابات کا انعقاد  آئین کے تحت ہیں یا ایکٹ کے ذریعے ہے؟ آئین کے تحت  سندھ حکومت ،  پیپلز پارٹی اور  الیکشن کمیشن کا  مدلل اور مفصل  آئینی جواب سپریم کورٹ میں جمع ہے ،آئین کا جمہوری تحفہ دینے والی جماعت  پیپلز پارٹی آئین کی بالادستی کے ہر فیصلہ کو خوش آئند قرار دیتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ڈسکہ انتخابات  میں سرکاری افسران کی ثابت شدہ  مداخلت  پر الیکشن کمیشن نے  آئین اور قانون کے تحت فیصلے کئے ہیں، ضمنی انتخابات میں  بری ترین کارکردگی والے حکمرانوں کی جھوٹی مقبولیت کا پول کھل گیا ہے ،حمزہ شہباز شریف کی ضمانت عدلیہ نے لی ہے جسے سیاسی معاملہ نہیں بنانا چائیے ۔نیر بخاری نے گفتگو میں کہا کہ سینٹ انتخابات کے بعد پی ڈی ایم سربراہی اجلاس منعقد ہوگا ،انتظامی کمیٹی نے حتمی سفارشات سٹیرنگ کمیٹی کو پیش کر دی  ہیں جسکی منظوری سربراہی اجلاس میں دی جائے گی جبکہ لانگ مارچ اور دھرنے کی حکمت عملی طے کر لی گئی ہے جس کا اعلان وقت پر کیا جائیگا۔

مزید :

قومی -