بجلی کی ٹرانسمیشن لائن کو اڑانے والوں پر فوجی عدالتوں میں مقدمہ چلنا چاہیے،خواجہ آصف

بجلی کی ٹرانسمیشن لائن کو اڑانے والوں پر فوجی عدالتوں میں مقدمہ چلنا ...

اسلام آباد (آئی این پی )وفاقی وزیر برائے پانی و بجلی خواجہ آصف نے کہاہے کہ بجلی کی ٹرانسمیشن لائن کو اڑا نے والوں پر فوجی عدالتوں میں مقدمہ چلنا چاہئے، ملک بھر میں بجلی کی ٹرانسمیشن لائن موجود ہیں، حکومت آبادیوں میں لائنوں کی حفاظت کرسکتی ہے ، صحراؤں میں نہیں، ہر کلو میٹر پر ٹرانسمیشن لائن کی حفاظت نہیں کی جاسکتی، وفاق کا کے الیکٹرک سے 650 میگاواٹ بجلی کی فراہمی کا معاہدہ ختم ہونے کے بعد کراچی کو بجلی دینے کے پابند نہیں ہیں، ملک بھر میں بلا تفریق بجلی فراہم کی جارہی ہے اور جو بجلی کا بل ادا کرے گا صرف اسے ہی بجلی فراہم کریں گے ، کراچی کو سستی بجلی فراہم کی جارہی ہے، وہاں بجلی بحران کا کوئی خدشہ نہیں ہے۔اپنے ا یک انٹرویو میں خواجہ آصف نے کہا کہ کے الیکٹرک سے نئی شرائط سے معاہدہ ہوگا اور اس میں شہر کی آبادی کے تمام مفادات کو مد نظر رکھا جائے گا، کراچی کو پہلے بھی بجلی دی اب بھی دیں گے۔ گزشتہ روز بلیک آؤٹ کے سوال پر انہوں نے کہا کہ نصیر آباد میں بجلی کی ٹرانسمیشن لائن کو اڑایا گیا تھا اور بجلی بحران دہشت گردی کے باعث ہوا جس کی ذمہ داری قبول کرتا ہوں، اس طرح کے حملہ کرنے والوں پر فوجی عدالتوں میں مقدمہ چلنا چاہئے۔ خواجہ آصف نے کہا کہ ملک بھر میں بجلی کی ٹرانسمیشن لائن موجود ہیں، حکومت آبادیوں میں لائنوں کی حفاظت کرسکتی ہے لیکن صحراؤں میں نہیں، ہر کلو میٹر پر ٹرانسمیشن لائن کی حفاظت نہیں کی جاسکتی۔

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...