مدارس دہشت گردی نہیں امن و سلامتی پر مبنی تعلیمات پھیلا رہے ہیں ،سمیع الحق

مدارس دہشت گردی نہیں امن و سلامتی پر مبنی تعلیمات پھیلا رہے ہیں ،سمیع الحق

 نوشہرہ کینٹ(آن لائن)جمعیۃ علماء اسلام کے امیر ور دارالعلوم حقانیہ کے مہتمم ،جمعیت علماء اسلام کے سربراہ مولانا سمیع الحق نے کہا ہے کہ مغرب کی اسلام دشمن قوتیں اور مسلمانوں کے لبرل اور سیکولر دانشورحکام اور سیاستدان،دینی مدارس کی آڑ میں اسلام سے اپنی نفرت ‘ بغض اور خبث باطن کا اظہار کررہے ہیں اور یہ آج کے روشن خیالوں کا ایک فیشن بن گیا ہے۔ مولانا سمیع الحق یہاں دارالعلوم حقانیہ کے وسیع ہال ’’ایوان شریعت ‘‘ میں تقسیم انعامات کی تقریب سے خطاب کررہے تھے۔ جس میں ہزاروں طلبہ اور علماء نے شرکت کی‘ تقریب میں دارالعلوم کے مختلف شعبوں اور درجات کے نمایاں پوزیشن حاصل کرنے والے طلبہ کو انعامات دئیے گئے۔ اس موقع پر دارالعلوم حقانیہ سے منسلک تمام شعبوں درس نظامی ‘ شعبہ حفظ و تجوید ‘ فقہ افتاء اورحدیث کے سپیشلائزیشن (تخصص) شعبہ حقانیہ ہائی سکول شعبہ کمپیوٹر کے طلبہ موجود تھے ۔تقریب سے نائب مہتمم مولانا انوارالحق ‘مولانا ڈاکٹر سید شیر علی شاہ ،مولانا حافظ شوکت علی اور دیگر علماء نے بھی خطاب کیا۔ مولانا سمیع الحق نے خصوصی خطاب میں عالم اسلام اور باالخصوص دینی مدراس اوراس میں پڑھائے جانے والے اسلامی علوم کو عالم کفر کی طرف سے درپیش چیلنجوں پر تفصیل سے روشنی ڈالی او رکہاکہ ان چیلنجوں کا نشانہ مسلم امہ کے جرنیل ‘ حکمران سیاسی پارٹیوں اور نام نہاد جمہوری اداروں کے پارلیمنٹ اور اسمبلیاں نہیں ہیں کیونکہ یہ سب اسلام دشمن قوتوں کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں۔ اور ان سے دشمن کو خطرہ نہیں جبکہ ان کا اصل نشانہ دینی مدارس کانظام اور نصاب تعلیم ہے جبکہ یہ مدارس دہشت گردی اور انتہاپسندی نہیں بلکہ اسلام کے امن و سلامتی پر مبنی تعلیمات پھیلا رہے ہیں اور عالمی دہشت گرد ان تعلیمات کو اپنے مذموم مقاصد کی راہ میں رکاوٹ سمجھتے ہیں ۔

مزید : علاقائی