محکمہ ایکسائز نے سیکنڈل میں ملوث ملازمین کو معاف اور پولیس نے پورا گروہ چھوڑ دیا

محکمہ ایکسائز نے سیکنڈل میں ملوث ملازمین کو معاف اور پولیس نے پورا گروہ چھوڑ ...

 فیصل آباد(بیورورپورٹ)چند سال قبل ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن ڈیپارٹمنٹ میں گاڑیوں کی جعلی رجسٹریشن اور فائلوں میں گھپلوں کے ایک بڑے سکینڈل میں بڑے پیمانے پر گرفتاریوں کے بعد مسروقہ گاڑیوں کی بوگس رجسٹریشن کا ایک اور سکینڈل منظر عام پر آگیا ہے جس میں فیصل آباد پولیس بھی ایکسائز والوں سے پیچھے نہیں رہی‘ فیصل آباد سے چوری شدہ گاڑی جعلی رجسٹریشن سمیت پہلے مانسہرہ اور پھر واپس فیصل آباد پہنچ گئی جو پیروی کے نتیجے میں تھانہ پیپلزکالونی میں پکڑی گئی گاڑی میں موجود چار افراد بھی پکڑے گئے عدالتی سپرد داری کے نتیجے میں گاڑی تو اپنے اصل مالک کے پاس پہنچ گئی مگر پولیس نے اس میں ملوث تمام ملزمان کو چھوڑ دیا اور ایکسائز کے متعلقہ سٹاف کو تو کسی نے گرفت میں ہی نہیں لیا. تفصیلات کے مطابق 23دسمبر 2013ء کو ہنڈا سٹی کار نمبری FSL757ڈی گراؤنڈ فیصل آباد سے چوری ہوئی جس کا مقدمہ نمبری 1396تھانہ پیپلزکالونی میں درج ہوا مگر کسی نے تفتیش ہی نہ کی اور مقدمہ کی فائل تھانہ میں پڑی رہی اس دوران 26فروری 2014ء کو محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن فیصل آباد نے کسی ٹرانسفر لیٹر یا این او سی کے بغیر ہی ایک شخص اختر کے نام پر ٹرانسفر کر کے اصل فائل بھی اس کے حوالے کر دی اور وہ مانسہرہ کے ایک شو روم پر پہنچ گئی پھر مانسہرہ والے گینگ نے وہ کار اظہر اسلام نامی ایک شخص کو بیچ دی اور محکمہ ایکسائز فیصل آباد نے 4اپریل 2014ء کو اس کی ڈپلیکیٹ رجسٹریشن جاری کر دی اور وہ کار نئے خریدار کے نام پر ٹرانسفر کر دی 26 فروری 14ء کی جعلی رجسٹریشن فائل پر تصدیق کرنے والے شخص بلال کا تعلق ملت روڈفیصل آباد پر واقع ایک شو روم سے ہے کچھ عرصہ قبل وہ کار اصل نمبروں کے ساتھ ہی واپس فیصل آباد پہنچ گئی کسی نے نمبر پلیٹ پہچان کر اصل مالکان کو اطلاع دی تو انہوں نے تھانہ پیپلزکالونی پولیس کو دی پولیس نے چند روز قبل وہ کار اس وقت پکڑ لی جب اس میں چار افراد سفر کر رہے تھے پولیس کار اور چاروں ملزمان کو قابو کر کے تھانہ پیپلزکالونی میں لے گئی جہاں سے اصل مالک محمد رؤف عدالت سے سپردداری پر اپنی کار لے گئے جس کے بعد پولیس نے ایک بار پھر تفتیش بند کر دی ان چاروں ملزمان کو پورے گروہ سمیت چھوڑ دیا جبکہ دوسری طرف محکمہ ایکسائز نے بھی اس سکینڈل کے تمام ذمہ داران کو معاف کر دیا اس قسم کے کئی دیگر واقعات ابھی تک فائلوں میں موجود ہیں.

مزید : علاقائی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...