سیاحوں کی توجہ حاصل کرنے کے لیے تائیوان نے شرمناک پارک تعمیرکر دیا

سیاحوں کی توجہ حاصل کرنے کے لیے تائیوان نے شرمناک پارک تعمیرکر دیا
سیاحوں کی توجہ حاصل کرنے کے لیے تائیوان نے شرمناک پارک تعمیرکر دیا

  

تائیپے (نیوز ڈیسک) سیاحت کے فروغ کیلئے ہر ملک تگ و دو کرتا ہے، کوئی اپنی سرسبز وادیوں اور پہاڑیوں کی تشہیر کرتا ہے تو کوئی بلند و بالا عمارات تعمیر کرتا ہے مگر تائیوان نے سیاحوں کو مائل کرنے کیلئے نہایت فحش طریقہ اختیار کیا ہے۔ اس ملک کے محکمہ سیاحت نے ایک فحش پارک کی تعمیر شروع کردی ہے جس میں جگہ جگہ جنسی فعل میں مشغول انسانوں اور جانوروں کے مجسمے نصب کئے جائیں گے اور پارک میں آنے والے مرد و خواتین کو گناہ کی ترغیب دینے کیلئے خصوصی گوشتے قائم کئے جائیں گے جہاں وہ ہوس پوری کرسکیں۔ یہ پارک تائیوان کے ساحل کے ساتھ ساتھ 37 میل کے وسیع و عریض علاقہ پر تعمیر کیا جائے گا اور اس میں گھنے درختوں اور پودوں کا اہتمام کیا جائے گا تاکہ لوگ الگ تھلگ گوشوں میں جاکر جو چاہیں کریں۔

وہ سوالات جو مر دوں کو خواتین سے کبھی نہیں پوچھنا چاہیے

محکمہ سیاحت کے اعلیٰ افسر شی چاﺅ ہوئی کا کہنا ہے کہ اس فحش پارک کا نام "Romantic Boulevard" رکھا جائے گا اور اس کے سامنے ایک شاندر ہوٹل بھی تعمیر کیا جائے گا تاکہ اگر پارک کے ماحول سے سیاحوں کے جذبات میں ہلچل برپا ہوجائے اور وہ ہوٹل میں جاکر لطف اندوز ہوسکیں۔ اس پارک کو جنوبی کوریا کے ایسے ہی متنازعہ پارک Jeju Loveland کی طرز پر بنایا جائے گا۔ اگرچہ تائیوان کے لوگوں کی بڑی تعداد نے اس شرمناک پارک کو عالمی برادری میں تائیوان کی بدنامی کا سبب قرار دیا ہے مگر محکمہ سیاحت کا کہنا ہے کہ اس سے حاصل ہونے والی کمائی بدنامی سے زیادہ اہم ہے اور پاک کی تعمیر پر کام جاری رہے گا۔ شی چاﺅ ہوئی کا کہنا ہے کہ یہ پارک اتنا مقبول ہورہا ہے کہ ابھی یہ زیر تعمیر ہے اور ماہانہ 2 لاکھ سیاح یہاں آرہے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس