چین کا خفیہ منصوبہ منظر عام پر آگیا،امریکہ اور جاپان کی نیندیں اڑ گئیں

چین کا خفیہ منصوبہ منظر عام پر آگیا،امریکہ اور جاپان کی نیندیں اڑ گئیں
چین کا خفیہ منصوبہ منظر عام پر آگیا،امریکہ اور جاپان کی نیندیں اڑ گئیں

  

بیجنگ (نیوز ڈیسک) چین اور جاپان کے درمیان مشرقی چین کے سمندر میں واقع جزائر کے متعلق تنازعہ مزید شدت اختیار کررہا ہے اور جاپانی میڈیا نے دعویٰ کیا ہے کہ چین متنازعہ علاقہ میں جاپان کے قریب ایک فوجی اڈے کی تعمیر کررہا ہے جس کی سیٹلائٹ تصاویر سے تصدیق ہوچکی ہے۔ مشرقی چین کے سمندر میں واقع تقریباً 52 جزائر جنہیں سینکاکو یا ڈیاﺅ جزائر بھی کہا جاتا ہے دونوں ملکوں کے درمیان وجہ تنازعہ ہیں۔

مصریوں نے غلطی سے فرعون کی ’شیو‘کر دی

جاپانی میڈیا کے مطابق چین نانجی جزیرے پر ہیلی پورٹ تعمیر کررہا ہے جہاں ہیلی کاپٹروں کیلئے 10 لینڈنگ پیڈ بنائے جارہے ہیں۔ یہ جزیرہ متنازعہ علاقے سے 300 کلومیٹر کی دوری پر واقع ہے جبکہ جاپان کا جزیرہ اوکی ناوا متنازعہ علاقے کے قریب ترین ہے مگر اس کی دوری 400 کلومیٹر ہے۔ جاپان کی Kyodo News کے مطابق چین نے نانجی جزیرے پر کئی راڈار مراکز بھی تعمیر کرلئے ہیں اور رن وے بھی تعمیر کئے جاچکے ہیں جبکہ اگلے سال تک مزید تعمیرات متوقع ہیں۔ اس علاقے میں چین کے غلبے سے جاپان کے ساتھ ساتھ اس کا دوست مریکا بھی سخت گھبرایا ہوا ہے کیونکہ امریکا نے جاپان کے جزیرہ روکی ناوا پر اپنا فوجی اڈا قائم کررکھا ہے اور یہاں چین کی طاقت میں اضافہ امریکی مفادات کیلئے بڑا خطرہ ہے۔

مزید : بین الاقوامی