آگ لگنے سے ریکارڈ ضائع،محکمہ انہارکی متعدد انکوائریاں متاثر ہونے کا خدشہ

آگ لگنے سے ریکارڈ ضائع،محکمہ انہارکی متعدد انکوائریاں متاثر ہونے کا خدشہ

  

لاہور(وقائع نگار)محکمہ انہار مغلپورہ سنٹرل سٹورز ڈویژن میں چند روز قبل لگنے والی آگ کی وجہ سے کئی اہم انکوائریوں میں استعمال ہونے والا ریکارڈ ضائع ہو گیا محکمہ کے سپیشل آڈٹ کا ریکارڈ اور اس کے تحت شروع ہونے والی انکوائریوں جن میں سٹورزڈویژن سے ملحقہ عمارتوں کی تعمیر کے حوالے سے کیا جانے والا سکینڈل ،لیہ میں ٹیوب ویلز کی تنصیبات اور بعد ازاں مرمت کے حوالے سے جاری ہونے والے پارٹس کا ریکارڈ اور اس کی تحقیقات متاثر ہونے کا اندیشہ ہے۔ذرائع کے مطابق کینال بینک روڈ پر چوبچہ پھاٹک کے ساتھ محکمہ انہار کے سنٹرل سٹورز کی عمارت کو چوبچہ انڈر پاس کی تعمیر کے سلسلہ میں منہدم کرنے کا سلسلہ جاری ہے اسی دوران گزشتہ اتوار کو مبینہ طور پر عمارت کے تہہ خانہ میں آگ بھڑک اٹھی جس نے دیکھتے ہی دیکھتے تہہ خانہ میں موجود تمام ریکارڈ اور سامان کو جلا کر راکھ کر دیا۔ جس کی وجہ سے کروڑوں روپے کی کرپشن کے حوالے سے چلنے والی پنجاب بھر کی انکوائریاں ٹھپ ہو جانے کا خطرہ ہے ۔ ذرائع کے مطابق سٹورز میں پنجاب بھر میں سپلائی کئے جانے والے ٹیوب ویلز ،ان کے پرزہ جات ،انجن ،ٹائرز اور دیگر آبپاشی کے سامان کا ریکارڈ موجود تھا جو کہ 1947سے لیکر آج تک پنجاب بھر میں سپلائی کیا گیا ہے ۔اس طرح سے جہاں پرانی انکوائریوں کے حوالے سے ڈیٹا ضائع ہوا ہے وہیں موجودہ چلنے والی انکوائریوں کا ریکارڈ بھی ضائع ہو گیا ہے۔ذرائع کے مطابق اس ریکارڈ کی مدد سے چند ماہ قبل سابق ایکسین حسن زیدی کے خلاف انکوائری کی گئی تھی جن کو بعد ازاں محکمہ سے برخاست کر دیا گیا ۔البتہ ابھی ان کے باقی ساتھیوں کے حوالے سے انکوائری جاری تھی اسی طرح سے اوکاڑہ کے نواحی قصبہ جبوکہ میں چلنے والے ٹیوب ویل کیس کی انکوائری متاثر ہونے کا اندیشہ ہے،جبکہ لیہ میں چلنے والا ٹیوب ویلز کی تعمیر اور بعد ازاں مزمت کے حوالے سے چلنے والی انکوائری کا ریکارڈ بھی متاثر ہوا ہے ۔ پنجاب بھر کی نہروں کے حوالے سے جو سپیشل آڈٹ کیا جاتا ہے اس کا پرانا ریفرنس ریکارڈ ہی نہیں بلکہ نیا ریکارڈ بھی ضائع ہو گیا ہے۔ذرائع کے مطابق ٹیوب ویلز اب پنجاب بھر میں ختم کر دیئے گئے ہیں لیکن ان ٹیوب ویلز کی تنصیب کے حوالے سے چلنے والی انکوائریوں کا ریکارڈ یہاں سنٹرل سٹورز ڈویژن میں موجود تھا کیونکہ یہاں سے ہی صوبہ بھر کو ٹیوب ویلز فراہم کئے جاتے تھے اور ان کے پرجہ جات اور انجن بھی فراہم کئے جاتے تھے ۔ریکارڈ کے ضائع ہونے سے یہ تمام انکوائریاں اب ٹھپ ہو جانے کا اندیشہ ہے۔

محکمہ انہار

مزید :

علاقائی -