ڈرگ اتھارٹی کو 80 ہزار ادویات کی خوردبرد کے بارے بتانا ہو گا، نور محمد مہر

ڈرگ اتھارٹی کو 80 ہزار ادویات کی خوردبرد کے بارے بتانا ہو گا، نور محمد مہر

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )ڈرگ لائرز فور م کے صدر نور محمد مہر نے کہا ہے کہ لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس مسعود عابد نقوی کے حالیہ مختصر فیصلہ کے تحت ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی کو 15دنوں میں مکمل تحقیقات میں بتانا ہوگا کہ 80ہزار ادویات کا ریکارڈ کیسے خرد برد ہوا۔ ادویات کی رجسٹریشن اور قیمتوں کا ریکارڈغائب ہونا مریضوں کیلئے وبال جان ہے ،نور محمد مہر کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ عدالت نے تحقیقات کے لئے ڈائریکٹر جنرل ایف آئی اے کو حکم دیا ہے کہ 15روز میں تحقیقات کر کے لاہور ہائی کورٹ میں مکمل رپورٹ جمع کروائی جائے ۔ یاد رہے کہ مورخہ03جنوری کو ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی نے اپنے خط نمبر657کے ذریعے تمام رجسٹرڈ فارما کمپنیوں و امپورٹرز فارما کمپنیوں سے درخواست کی تھی کہ وہ بتائیں کہ اُن کی ادویات کی رجسٹریشن کا ریکارڈ کیا کیا ہے اور انکی قیمتیں کیا ہیں؟اور ڈریپ نے یہ تسلیم کیا ہے کہ اُس کے پاس ادویات و قیمتوں کامکمل ریکارڈ نہیں ہے ۔

مزید :

صفحہ آخر -