میوہسپتال سٹنٹ سکینڈل:ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی کے دو ڈائریکٹرز بھی شامل تفتیش

میوہسپتال سٹنٹ سکینڈل:ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی کے دو ڈائریکٹرز بھی شامل تفتیش

  

لاہور(کرا ئم ر پو رٹر) میو ہسپتال سے غیر رجسٹرڈ سٹنٹ پکڑے جانے کا معاملے کی تفتیش کا دائرہ کار مزید وسیع کردیا گیا ،ایف آئی اے نے ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی کے دو ڈائریکٹرز کو بھی شامل تفتیش کرنے کے لیے طلبی کے ثمن بھجوا دیئے۔ذرائع کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ میو ہسپتال سے برآمد ہونے والے غیر رجسٹرڈ سٹنٹس کے معاملے پر ایف آئی اے نے تفتیش کے لیے ڈائریکٹر پرائسنگ بورڈغلام رسول اور ڈائریکٹر رجسٹریشن بورڈ امان اللہ کو طلبی کے لیے ثمن بھجوا دیئے ہیں۔ایف آئی اے حکام کا کہنا ہے کہ دونوں افسران سے غیر رجسٹرڈ سٹنٹ مہنگے داموں فروخت کرنے کے حوالے سے پوچھ گچھ کی جائے گی۔اسی طرح ایف آئی اے حکام کا یہ بھی کہنا تھا کہ ڈرگ ریگولیرٹی اتھارٹی کی جانب سے 2015ء میں ایک پالیسی تیار کی گئی اور ادویات کی فروحت کا شرع منافع مقرر کیا گیا تاہم اس کے باوجود پنجاب میں کوئی بھی ایسی میڈیسن موجود نہیں جو پرائسنگ کے فارمولے پر پوری اترتی ہو بلکہ سٹنٹس ایک ہزار فیصد زیادہ منافع پر فروخت ہو رہے تھے۔ذرائع کے مطابق ڈریپ کے پرائسنگ قوانین کے مطابق ملکی ادویات 70فیصد اضافے سے فروخت ہونی چاہئیں جبکہ غیرملکی ادویات 35روپے اضافے کے ساتھ فروخت ہونی چاہئیں۔

مزید :

صفحہ آخر -