میانی صاحب قبرستان سے غائب ہونے والی بچی کی نعش برآمدنہ ہوسکی

میانی صاحب قبرستان سے غائب ہونے والی بچی کی نعش برآمدنہ ہوسکی

  

لاہور(وقائع نگار) مزنگ میں میانی صاحب قبرستان سے چند روز قبل غائب ہونے والی بچی کی نعش پولیس تاحال برآمد نہ کر سکی جبکہ پولیس نے قبرستان کے اطراف کے علاقوں کے جیو فینسنگ اورعلاقہ مکینوں کے بیانات ریکارڈ کرنے کے ساتھ ساتھ تفتیش کا دائرہ کار وسیع کرتے ہوئے قبرستان اور اس کی اطراف کے جرائم پیشہ افراد کو شامل تفتیش کرنے کا فیصلہ کر لیا۔ دوسری جانب حراست میں لئے جانے والے 9میں سے 3ملزمان کا پولیس نے ریمانڈ حاصل کر کے ان سے تفتیش کا سلسلہ بھی شروع کر رکھا ہے۔ذرائع کے مطابق مزنگ کے علاقے کے رہائشی علی حسن کے ہاں چندروز قبل بچی پیدا ہوئی اور وفات پا گئی جسے میانی صاحب قبرستان میں سپردخاک کیاگیا ۔ بچی کی قبرکھودکر نامعلوم افراد نے لاش نکال لی تھی۔ پولیس نے واقعہ کا مقدمہ درج کر کے کارروائی کی اور 9 افراد کو حراست میں لیکر تفتیش شروع کر دی۔ بعد ازاں پولیس نے حراست میں لئے جانے والے3ملزمان کا ریمانڈ بھی حاصل کر لیا ہے اور قبرستان کے اطراف کے علاقوں کی جیو فینسنگ بھی مکمل کر لی لیکن تاحال بچی کی لاش کا کوئی سراغ نہیں لگایا جا سکا ہے۔پولیس نے اہل علاقہ کے بیانات بھی قلمبند کر لئے ہیں ۔تفتیشی افسر کے مطابق قریبی میڈیکل کالجز سے بھی معلومات حاصل کی جا رہی ہیں کہ کہیں کوئی مافیا قبروں سے لاشیں نکال کر بیچ تو نہیں رہا۔

مزید :

علاقائی -