پانامہ نواز شریف کے گلے کا طوق ہے اس دلدل سے نکل نہیں سکتے: سراج الحق

پانامہ نواز شریف کے گلے کا طوق ہے اس دلدل سے نکل نہیں سکتے: سراج الحق

  

اسلام آباد(آن لائن) امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ مال مفت تو دل بے ر حم ہوتا ہے لیکن حکمرانوں کو مظلوموں کی بددعائیں لگ گئیں ، پانامہ نواز شریف کے گلے کا طوق ہے وہ اس دلدل سے نکل نہیں سکتے ،بھارت خون کے دریا بہانہ چاہتا ہے اور ہمارے ارباب اختیار ہم پر بھارتی کلچر مسلط کرنا چاہتے ہیں ،۔ ان خیالات کا ا ظہار انہوں نے جمعہ کو سپریم کورٹ کے باہر پانامہ لیکس کے مقدمے کی سماعت کے بعد صحافیوں سے گفتگو میں کیا ۔ امیر جماعت ا سلامی نے کہا کہ اب یقین ہوچکا ہے کہ حکمرانوں کو عوام نے جو بددعائیں دی وہ قبول ہورہی ہیں کیونکہ حکمران پانامہ لیکس کے گرداپ میں ایسے پھنس چکے ہیں کہ اس سے نکلنا اب ان کیلئے ممکن نہیں ہے انہوں نے کہا کہ عجیب تماشا ہے کہ باون کروڑ روپے دیئے اور لئے جارہے ہیں لیکن یہ تک م علوم نہیں کہ یہ مال کس کا ہے باپ تسلیم کرتا ہے کہ یہ جائز جائیداد ہے اور اس کے تمام ثبوت موجود ہیں جبکہ بچے بیرون ملک جائیداد کی موجودگی کا انکار کرتے ہیں اب عدالت میں معاملہ آنے پر نہ تو وزیراعظم کے بیان کے مطابق ثبوت دیئے گئے اور نہ ان کے بچے اپنے بیانات پر قائم ہیں بلکہ وہ بھی مکر گئے ہیں اور اب جھوٹ کو سچ ثابت کرنے کیلئے حربے استعمال ہورہے ہیں لیکن سچ سامنے آچکا ہے کہ حکمرانوں نے ملک کو لوٹا ہے اور اب وہ خود کو بچا نہیں سکتے توقع ہے کہ بہت جلد سپریم کورٹ کے فیصلے سے دودھ کا دوھ اور پانی کا پانی ہوجائے گا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ پانامہ لیکس کے مسئلے پر ہمارے اس موقف کو بھی تقویت مل گئی ہے کہ اداروں کے افسران خود مختار ہونے کی بجائے کسی کے ماتحت اور احسان تلے دبے ہونگے تو وہ پھر ان ان لوگوں کیخلاف کارروائی کرنا تو دور کی بات وہ منہ بھی نہیں کھول سکتے پانامہ لیکس کی تحقیقات سے ثابت ہوگیا ہے کہ ہمارے قومی ادارے وزیراعظم اور دیگر حکام کیخلاف کارروائی سے ڈرتے ہیں جب نیب کا چیئرمین اور دوسرے اداروں کے سربراہان کا تقرر وزیراعظم یا وزیراعظم کے ساتھ اپوزیشن کے قائد کرینگے تو اپنے اتھارٹیز کیخلاف وہ کارروائی کیسے کرسکتے ہیں ؟ امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا کہ میں نے چیئرمین نیب کو پانامہ لیکس کے حوالے سے غیر جانبدارانہ تحقیقات کرنے کے سلسلے میں خط بھی لکھا لیکن عوام جانتے ہیں کہ وہ کارروائی نہ کرسکے اس کی وجہ صاف ظاہر ہے کہ وہ اتھارٹیز کیخلاف کارروائی نہیں کرسکتے اور جب تک ادارے بلاتفریق کارروائی اور احتساب کرنے کے قابل نہیں بنیں گے تب تک چھوٹے موٹے چور تو پکڑے جائیں گے لیکن بڑے بڑے مگرمچھ قانون کے شکنجے سے باہر ہی رہیں گے انہوں نے کہا کہ مودی نے پاکستان کو بنجر بنانے کی غرض سے پانی بند کرنے پر تلا ہوا ہے جبکہ نواز شریف کو پاکستان میں بھارتی فلمیں دکھانے کی اجازت کی سمری بھجوائی گئی ہے بھارت خون کے دریا بہانہ چاہتا ہے اور ہمارے ارباب اختیار ہم پر بھارتی کلچر مسلط کرنا چاہتے ہیں جس کی ہم شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایک روز قبل ایوان میں جو ہنگامہ آرائی ہوئی اس سے ایوان کا تقدس پامال ہوا ہے اور پوری قوم کو پریشانی اور مایوسی کا سامنا کرنا پڑا کیونکہ عوام نے ان اراکین کو منتخب کرکے اپنی قیادت اور رہنمائی کیلئے بھیجا ہے لیکن جب وہ آپس میں لڑینگے تو قوم کو یہ واضح پیغام جائے گا کہ یہ قیادت او نظام ان کیلئے کچھ بھی کرنے کے قابل ہیں ۔

مزید :

صفحہ آخر -