عدلیہ مکمل آزاد ہے ، فرائض کی انجام دہی کیلئے کوئی کوتاہی نہیں کرینگے : چیف جسٹس

عدلیہ مکمل آزاد ہے ، فرائض کی انجام دہی کیلئے کوئی کوتاہی نہیں کرینگے : چیف ...

  

 کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک )چیف جسٹس پاکستان میاں ثاقب نثار نے کہا ہے کہ ہمارے ملک کی عدلیہ مکمل طور پر آزاد ہے جبکہ سپریم کورٹ میں ایسے نایاب جج صاحبان موجود ہیں جن پر فخر کیا جاسکتا ہے۔تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس پاکستان کاسپریم کورٹ بارکے عشائیے سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ پاکستان کی عدلیہ دنیاکی کسی عدلیہ سے کم نہیں ہے،یہاں زیرالتوا مقدمات جلد مکمل کرنے کیلیے وکلا کا تعاون درکارہے۔انہوں نے اس با ت کے عزم کااظہار کرتے ہوئے کہا کہ فرائض کی انجام دہی کیلئے کوئی کوتائی نہیں کریں گے اور نہ ہی اپنے ملک کے قوم کو کبھی مایوس کرینگے جبکہ یہ باتیں کہنے سے ہی نہیں ہمارا عمل ان باتوں کو ثابت بھی کرے گا۔چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار نے کہا ہے کہ پاکستان کی عدلیہ دنیا کی کسی عدلیہ سے کم نہیں ہے ، فرائض کی انجام دہی کیلئے کوئی کوتاہی نہیں کریں گے ،عدلیہ ایک آزاد اور خودمختار ادارہ ہے ،جج قانون اور آئین کے مطابق فیصلہ کرنے کا پابندہے ، مقدموں کے فیصلے جلدی کریں ،تاخیر سے لوگوں کو تکلیف ہوتی ہے ۔وہ جمعہ کو کراچی میں سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کے عشائیے کی تقریب سے خطاب کررہے تھے ۔انہوں نے کہا کہ مجھے اس بات پر غرور ہے کہ پاکستان کی عدلیہ آزاد ہے ،فرائض کی انجام دہی میں کوئی کوتاہی نہیں کریں گے ،مقدموں کے فیصلوں میں تاخیر سے لوگوں کو تکلیف ہوتی ہے ۔چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ زیر التواء مقدمات جلد مکمل کرنے کیلئے وکلاء کا تعاون درکا ہے ،کسی جج کو اختیار نہیں کہ وہ اپنی خواہش کے مطابق فیصلہ کرے ،جج قانون اور آئین کے مطابق فیصلہ کرنے کا پابند ہے ،ہم نے قانون اور آئین کے مطابق فیصلے کرنے کی قسم کھائی ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہم وکلاء کے مسائل حل کریں گے ،بار کو سہولت دینا ہم پر فرض ہے ،پاکستان کی عدلیہ دنیا کی کسی عدلیہ سے کم نہیں ہے ،ہمیں عدالت آنے والوں کو سہولت دینی چاہیے ۔

چیف جسٹس

مزید :

صفحہ اول -